ڈپٹی اسپیکرپنجاب اسمبلی کےاختیارات واپس لینےکااقدام ہائیکورٹ میں چیلنج

درخواست کو قابل سماعت قراردے دیا
Apr 08, 2022

ڈپٹی اسپیکرپنجاب اسمبلی کے اختیارات واپس لینے کا اقدام لاہور ہائیکورٹ میں  چیلنج کردیا گیا۔

پنجاب اسمبلی کے ڈپٹی اسپیکردوست مزاری نےاپنے وکیل کی وساطت سے درخواست دائر کی۔

چیف جسٹس لاہورہائیکورٹ نے درخواست پردائراعتراض ختم کردیا اور درخواست کو قابل سماعت قراردے دیا۔

درخواست میں موقف اختیار کیا گیا کہ اسپیکرکی غیرموجودگی میں ڈپٹی اسپیکر ہاؤس کا لیڈر ہوتا ہے اورڈپٹی اسپیکرنےقانونی طریقے سے اجلاس طلب کیا تھا۔

یہ بھی موقف اختیار کیا کہ اسپیکرنےغیرآئینی طریقےسے ڈپٹی اسپیکر کے اختیارات کو ختم کردیا۔

واضح رہے کہ اسپیکر پنجاب اسمبلی چوہدری پرویز الہٰی نے ڈپٹی اسپیکر دوست مزاری کے اختیارات واپس لئے تھےجس کا نوٹیفکیشن جاری بھی کردیا گیا تھا۔

نوٹیفکیشن کے مطابق پنجاب اسمبلی آرٹیکل 235 کے تحت ڈپٹی اسپیکر کے اختیارات واپس لیے گئے۔

اعلامیے میں کہا گیا کہ یہ اختیارات اسپیکر کی ہدایات پر واپس لیے جارہے ہیں، نوٹیفکیشن کی کاپی تمام متعلقہ ادراوں کو بجھوا دی گئی۔

ترجمان پنجاب اسمبلی کا کہنا تھا کہ اختیارات واپس لیے جانے کے بعد اب ڈپٹی اسپیکر اجلاس طلب نہیں کرسکتے۔

ترجمان کا یہ بھی کہنا تھا کہ ڈپٹی اسپیکر کا آرڈر قواعد انضباط کار 1997کے قاعدہ 28کی شرائط کے خلاف ہے،ڈپٹی اسپیکر کے دستخط سے اجلاس طلبی کاجعلی آرڈرجاری ہوا اور اجلاس طلب کرنے کے جعلی آرڈر کا اسمبلی سیکریٹریٹ نےجائزہ لیا،جعلی آرڈر پر کوئی ڈائری نمبر درج نہیں کیا گیا۔

ترجمان نے واضح کیا کہ ڈائری نمبر ایسی اہم نوعیت کی دستاویزات کیلئے ضروری ہوتاہے یہ آرڈرنہ تواسمبلی سیکرٹریٹ نے تیار کیا نہ ہی اسےجاری کیا ڈپٹی اسپیکرکاجاری کردہ مذکورہ آرڈراسمبلی قواعدوضوابط کےخلاف ہےاور زیربحث آرڈر اسمبلی سیکرٹریٹ سے باہر تیار کیا گیا۔

PUNJAB ASSEMBLY

Tabool ads will show in this div