چاراپریل کوآئین توڑکرعمران خان کی اناکی تسکین کی گئی، بلاول بھٹو

اتوار کو جو قومی اسمی میں کل ہوا وہ آئین کو توڑنے کےمترادف ہے
Apr 04, 2022

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/2022/04/Bilawal-Pc-Isb-04-04.mp4"][/video]

پاکستان پیپلزپارٹی کے چئیرمین بلاول بھٹو زرداری نے کہا ہے کہ صدرمملکت،وزیراعظم پاکستان،اسپیکر اور ڈپٹی اسپیکرقومی اسمبلی نے آئین توڑ کرعمران خان کی انا کی تسکین کی ہے۔ 

چار اپریل کو اسلام آباد میں اپوزیشن رہنماؤں کے ساتھ مشترکہ پریس کانفرنس کرتےہوئے بلاول بھٹو نے کہا کہ اتوار کو جو قومی اسمی میں کل ہوا وہ آئین کو توڑنے کےمترادف ہے۔

انھوں نے کہا کہ وزیراعظم کو ہٹانےکے لئے جمہوری اورآئینی طریقہ کارموجود ہے لیکن وزیراعظم نے آنا کی وجہ سےعدم اعتماد کوآئین توڑ کر سبوتاژ کرنے کی کوشش کی۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ آئین کی بنیاد سیاسی جماعتوں نے رکھی لیکن کالی شقیں اٹھارویں ترمیم کی صورت میں ختم کیں۔

انھوں نے واضح کیا کہ ہم اس بات پر کبھی خوش نہیں ہونگے کہ کوئی غیر آئینی کام کیا جائے کیوں کہ ہمارے دباؤ کی وجہ سے 3 مہینے کے لئے حکومت کا جینا حرام کردیا گیا۔

بلاول بھٹو نے کہا کہ عمران خان نے تحریک عدم اعتماد میں بندوق اٹھا کر خود کشی کر لی اورآج ان کی حکومت چلی گئی اور وہ جشن منانے کا سوچ رہے ہیں۔

پاکستان پیپلزپارٹی کے بانی ذوالفقار علی بھٹو سے متعلق انھوں نے کہا کہ 4 اپریل کو بھٹو کا عدالتی قتل کیا گیا تاہم آج تک عدالت سے انصاف نہیں مل سکا،ہمارا صدارتی ریفرنس آج بھی عدالت میں زیرالتواء ہے۔

ان کا یہ بھی کہا تھا کہ ہمارا آئین محض کاغذ کا ٹکڑا نہیں ہے،عدالت سے امید اور درخواست ہے کہ عمران خان کا اسٹیس کو روکے، ہمارا مطالبہ ہے کہ فوری فل کورٹ بینچ تشکیل دیا جائے۔

IMRAN KHAN

BILAWAL BHUTTO

Tabool ads will show in this div