ہمارے ساتھ ہمیشہ ڈبل گیم ہوتی ہے، آصف زرداری

عمران خان خط قوم کے سامنے لائيں، بلاول بھٹو زرداری
Mar 29, 2022

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/2022/03/ZARDARI-ON-DOUBLE-GAME-1700-SOT-29-03.mp4"][/video]

آصف زرداری کہتے ہیں کہ ق لیگ والے رات 12 بجے مجھے مبارک دینے آتے ہیں، صبح کہیں اور چلے جاتے ہیں، ہم سب کو مل کر ملک کو بچانا ہوگا، ہمارے ساتھ ہمیشہ ڈبل گیم ہوتی ہے۔ بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ ایم کیو ایم کی ایسی کوئی ڈیمانڈ نہیں جس سے ہم نے انکار کیا، عمران خان کو چیلنج دیتا ہوں کہ خط قوم کے سامنے لائیں۔

رکن قومی اسمبلی اسلم بھوتانی بھی اپوزیشن کو پیارے ہوگئے۔ اسلام آباد میں آصف زرداری، بلاول بھٹو زرداری، اختر مینگل اور دیگر کے ساتھ ملاقات کے بعد مشترکہ پریس کانفرنس کی گئی۔

اس موقع پر بلاول بھٹو زرداری نے 28 مارچ کو تاریخی دن قرار دیا۔ ان کا کہنا تھا کہ کل بی اے پی نے حکومت چھوڑ کر اپوزیشن کا ساتھ دینے کا اعلان کیا، جمہوری وطن پارٹی نے بھی اپوزیشن کا ساتھ دینے کا فیصلہ کیا ہے، اسلم بھوتانی کو بھی خوش آمدید کہتے ہیں۔

بلوچستان سے رکن قومی اسمبلی اسلم بھوتانی نے کہا کہ ہم ان (تحریک انصاف) کے ساتھ ساڑھے 3 سال چلے ہیں، میں اب زرداری صاحب کے ساتھ ہوں، جہاں آصف زرداری ہوں گے میں وہاں جاؤں گا، بہت پہلے ان کو بتادیا تھا میری وجہ سے آپ کا کوئی معاملہ نہیں رکے گا۔

اختر مینگل نے میڈیا سے گفتگو میں کہا کہ ذہنی طور پر ہم پہلے فیصلہ کرچکے تھے، حکومت عدم اعتماد کی تحریک میں تاخیر سے کام لے رہی ہے۔

آصف زرداری پریس کانفرنس میں کہا کہ سیاسی لوگوں سے رابطہ رہتا ہے، ملک کو بچانے کیلئے ان سب کو دعوت دی تھی، ق لیگ والے رات 12 بجے مجھے مبارک دینے آتے ہیں، صبح کہیں اور چلے جاتے ہیں، ہم سب کو مل کر ملک کو بچانا ہوگا۔

بلاول بھٹو زرداری نے عمران خان کو چيلنج دیا کہ وہ خط قوم کے سامنے لائيں، قوم جان چکی ہے کہ عمران خان جھوٹے الزامات لگاتے ہيں، ایم کیو ایم پاکستان کی ایسی کوئی ڈیمانڈ نہیں جس سے ہم نے انکار کیا ہو۔

صحافی نے آصف زرداری سے سوال کیا کہ کیا آپ کے ساتھ ڈبل گیم تو نہیں ہورہی؟، جس پر ان کا کہنا تھا کہ وہ تو ہمیشہ ہی ہوتی ہے۔

بلاول بھٹو زرداری نے کا کہنا تھا کہ اب اسپيکر دھاندلی کرنے کا سوچے گا بھی نہيں، ہماری عدليہ سب ديکھ رہی ہے، عدليہ عدم اعتماد ميں دھاندلی نہيں ہونے دے گی، یہ عمران خان کا آخری ہفتہ ہے، کامیابی متحدہ اپوزیشن کی ہوگی۔

پنجاب کی وزارت اعلیٰ کیلئے چوہدری پرویز الٰہی کی حمایت سے متعلق سوال پر آصف زرداری نے کہا کہ اب دیر ہوچکی، پنجاب میں بھی اپنی مرضی کی تبدیلی لائیں گے، پی ٹی آئی پرویز الٰہی کو وزیراعلیٰ نہیں بناسکتی۔

چیئرمین پیپلزپارٹی کا کہنا ہے کہ ہمارے نمبرز پورے ہیں، ہم بونس میں جارہے ہیں، گورنر سندھ ميں ہمت ہے تو کل نہيں آج گورنر راج لگاکر دکھائے۔

سابق وزیراعظم کی واپسی سے متعلق سوال پر بلاول نے کہا کہ نواز شریف نے کب واپس آنا ہے اس کا فیصلہ وہ اور ان کی جماعت کرے گی۔

Tabool ads will show in this div