دوسرے کراچی ایوارڈز: 40 اداروں کی خدمات کا اعتراف

تیرہ مختلف شعبوں میں ایوارڈز دیئے گئے

دوسرے کراچی ایوارڈز (کے ایچ آئی ایوارڈز) میں شہر قائد کی خدمت کرنیوالے اداروں کو سراہا گیا، تیرہ مختلف شعبوں بشمول ثقافت اور ورثہ، کھیل، سماجی خدمات، سیفٹی و دیگر سے منسلک 40 اداروں کو ان کے سماجی تبدیلی کے اقدامات کے باعث ایوارڈ سے نوازا گیا۔

شہر قائد کی ترقی و فلاح اور سماجی بہبود کیلئے کام کرنے والے اداروں کی خدمات کے اعتراف میں گورنر ہاؤس کراچی میں دوسرے کے ایچ آئی (کراچی) ایوارڈز کی تقریب منعقد ہوئی۔ تقریب میں 13 مختلف شعبوں سے تعلق رکھنے والے 40 اداروں نے ایواڈز اپنے نام کیا، جنہیں ثقافت اور ورثہ، کھیل، سماجی خدمات، حفاظت و دیگر اقدمات کے ذریعے سماجی ترقی کی کوششوں کے اعتراف میں اعزاز سے نوازا گیا۔

تقریب کے مہمان خصوصی گورنر سندھ عمران اسماعیل تھے جبکہ چیئرمین نیپرا توصیف ایچ فاروقی، وزیر مملکت اور سرمایہ کاری بورڈ (بی او آئی) کے چیئرمین محمد اظفر احسن بھی خاص مہمانوں میں شامل تھے۔

کے ایچ آئی ایوارڈز میں منصفانہ اور غیرجانبدارانہ طریقے سے جیتنے والوں کو بجلی کے بلوں پر رعایت کی صورت میں 40 ملین (4 کروڑ) روپے کی امداد دی جاتی ہے۔

تقریب سے خطاب کرتے ہوئے گورنر سندھ عمران اسماعیل نے کہا قومی ترقی کیلئے کراچی کی ترقی اہم ہے، ہم سب کو شہر کی رونقیں بحال کرنے میں اپنا کردار ادا کرنا چاہئے، وفاقی حکومت کراچی کی ترقی کیلئے اقدامات کررہی ہے، گرین لائن بی آر ٹی منصوبہ کے علاوہ وفاقی حکومت شہریوں کو درپیش چیلنجز سے نمٹنے اور شہر قائد کی ترقی پر خصوصی توجہ دے رہی ہے۔

وزیر مملکت اور چیئرمین بورڈ آف انویسٹمنٹ محمد اظفر احسن نے اپنے خطاب میں کہا ملک کا معاشی حب ہونے کے ناطے کراچی میں غیرملکی سرمایہ کاری کی بہت گنجائش ہے، تاہم اس کیلئے تسلسل کے ساتھ شہر کی بہتری کیلئے اقدامات کرنا ضروری ہیں، ہمیں شہر کو درپیش چیلنجوں سے نمٹنے اور اس کو ترقی دینے کیلئے اجتماعی اقدامات کرنا ہوں گے۔

چیئرمین نیپرا توصیف ایچ فاروقی نے ایوارڈ جیتنے والوں کو مبارکباد دیتے ہوئے کے ای کے اقدام کو سراہا۔ انہوں نے اپنے خطاب میں کہا کے ای کو اپنے سروس والے علاقوں کی کمیونیٹیز کی سماجی و اقتصادی ترقی کیلئے نئے طریقے تلاش کرتے دیکھنا قابل ستائش ہے، ہمیں یہ سمجھنا ہوگا کہ پائیدار ترقی کیلئے صارفین اور ماحول کے ساتھ بامعنی تعلقات قائم کرنا ضروری ہے، یہی وجہ ہے کہ نیپرا نے پاور سیکٹر کی ترقی کیلئے ’پاور ودھ پراسپیریٹی‘ وژن متعارف کرایا اور ہم سی ایس آر اقدامات کے ذریعے پاکستان میں بڑے پیمانے پر سرمایہ کاری اور روزگار کے مواقع پیدا ہوتے دیکھ رہے ہیں۔

کے ایچ آئی ایوارڈز کے دوسرے ایڈیشن کیلئے بھیجی گئی سینکڑوں درخواستوں کی شہزاد رائے، سدرہ اقبال، جہاں آراء سمیت 15 افراد پر مشتمل آزاد جیوری نے آئی ایم کراچی کے بانی اور موجودہ صدر سعد امان اللہ خان کی قیادت میں جانچ پڑتال کی۔

کے ایچ آئی ایوارڈز کی جیوری کے صدر سعد امان اللہ خان کا اس موقع پر کہنا تھا کہ گزشتہ سال کے مقابلے رواں سال ناصرف ہمیں زیادہ درخواستیں موصول ہوئیں بلکہ درخواست دہندگان کی جانب سے تجویز کردہ منصوبوں کا معیار اور جدت بھی اس بات کو ظاہر کرتی ہے کہ وہ کراچی کے ساتھ دلی وابستگی رکھتے ہیں۔

کے الیکٹرک کے چیف ایگزیکٹو آفیسر مونس علوی نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا ہم ایک عظیم معاشرے کی تعمیر کیلئے کوشاں ہیں، کراچی جیسے شہروں کیلئے یہ کوئی آسان کام نہیں، اس کیلئے 24 گھنٹے کام کرنے والے سینکڑوں بڑے اور چھوٹے اداروں کا تعاون درکار ہوتا ہے۔

KE

KHI AWARDS 2022

Tabool ads will show in this div