آصف زرداری کو دی گئی دھمکی برداشت نہیں کرینگے،بلاول

ہمارےاندرشہیدوں کاخون ہے

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/2022/03/Samaa-Drone-Imran-Khan-Bandhook-Bilawal-Sot.mp4"][/video]

بلاول بھٹو زرداری کا کہنا ہے کہ سابق صدر آصف زرداری کو حکومت کی جانب سے دی جانے والی دھمکی برداشت سے باہر ہے۔ انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ میری بہن آصفہ بھٹو پر ڈرون حملہ کرکے ہمیں پیغام دیا گیا ہے۔

اسلام آباد میں اہم پریس کانفرنس سے خطاب میں پاکستان پیپلزپارٹی ( پی پی پی) کے چیئرمین بلاول بھٹو زرداری کا کہنا تھا کہ دو ایسے واقعے ہوئے ہیں جو میرے لیے برداشت سے باہر ہیں۔

ڈرون حادثے پر بلاول نے کہا کہ آصفہ بی بی پر حملے کا واقعہ ہمارے لیے قابل برداشت نہیں، آصف زرداری کو دھمکی بھی برداشت سے باہر ہے۔ جو سمجھتے ہیں ہم ڈر جائیں گے وہ جان لیں ہمارے اندر شہیدوں کا خون ہے۔ حساس اداروں سے آصفہ سے ڈرون کیمرہ ٹکرانے کی تحقیقات کا مطالبہ کر دیا ہے۔ ڈرون کا آصفہ بھٹو کی طرف بڑھنا میرے اور میرے والد کیلئے پیغام تھا۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے کبھی بندوق استعمال نہیں کی مگر ہم بندوق استعمال کرنا جانتے ہیں، میں پرامن آدمی ہوں، پرامن رہوں گا۔ عوام نے عدم اعتماد کا فیصلہ سنادیا، عوام نے سلیکٹڈ کو مسترد کر دیا ہے۔

ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ جس چینل کا ڈرون کیمرا تھا ، اس چینل کے مالک نے خط لکھ کر معذرت کی۔ ابھی ہماری انکوایری چلنہیں ہے رہی ہے ابھی چینل کا نام نہیں لیتا، ہم ڈرون کیمرے واقعے پر ٹیکنالوجی ماہرین کی رپورٹ تیار کرائینگے۔

پی پی چیئرمین نے کہا کہ پیپلزپارٹی نے اپوزیشن کو حکومت کے خلاف متحد کیا، ہم نے تمام اپوزیشن جماعتوں کو پی ڈی ایم کے پلیٹ فارم پر اکھٹا کیا، آپ کو قومی اسمبلی میں شکست دی اور آپ کو عدم اعتماد کا سامنا کرنا پڑا، پیپلزپارٹی نے ہمیشہ غیر جمہوری اقدامات کے خلاف کھڑی ہوئی اور آئندہ بھی جب کوئی سلیکٹڈ ائے گا تو ہماری جماعت اس کے خلاف کھڑی ہوگی۔

ان کا یہ بھی کہنا تھا کہ پاکستان پیپلزپارٹی نے سب سے پہلے اس حکومت کو سلیکٹڈ کہا، ہم نے ان کی عوام دشمن پالیسیوں کو مسترد کیا، ہم نے پی ٹی آئی کے آئی ایم ایف عوام دشمن معاہدے کو پی ٹی آئی ایم ایف بجٹ قرار دیکر اس کے خلاف ملک بھر میں احتجاج کیا۔

وزیراعظم پر تنقید

بلاول نے کہا کہ جتنا دباؤ آئے گا وزیراعظم زیادہ گالیاں دیں گے، گالیاں دینے سے ان کی کرسی نہیں بچے گی، کرسی خطرے میں دیکھ کر وزیراعظم مزید گالیاں دیں گے۔ لوگ جان لیں کہ پیپلزپارٹی ہر دور میں ہر ظالم سے ٹکرائی ہے۔

پی پی چیئرمین نے کہا کہ پاکستان کے عوام نے اپنا فیصلہ سنا دیا، اب جھوٹ نہیں چلے گا، سلیکٹڈ کے خلاف پیپلزپارٹی نے پہلے دن سے مقابلہ کیا،آپ ہمیں زندگی اور موت کی دھمکی دیں گے، یہ مذاق نہیں۔ یہ سمجھتے ہیں ہم بچے ہیں، ہم اب بچے نہیں رہے، جو میں آپ کیساتھ کروں گا آپ کی نسلیں نہیں بھولیں گی، ہم نے کبھی بندوق استعمال نہیں کی مگر استعمال کرنا جانتے ہیں، ہمارے ساتھ سیاست کریں، سیاست کرنا ہمارا اور آپ کا حق ہے، جو سمجھتے ہیں ہم ڈر جائیں گے۔

انہوں نے کہا کہ ہماری اس حکومت اور وزیراعظم سے ذاتی لڑائی نہیں، اگر عمران خان صاف شفاف الیکشن کے ذریعے جیت کر آئین تو ہم انہیں سلیکٹڈ نہیں کہیں گے، کل ہم تحریک عدم اعتماد کے ذریعے آپ کو گھر بھیجیں گے، پھر صاف شفاف الیکشن کے ذریعے ایک منتخب حکومت آئے گی۔

عوامی مارچ

چیئرمین پیپلزپارٹی نے کہا کہ پیپلزپارٹی کا عوامی مارچ عدم اعتماد کیلئے تھا، پاکستان کے عوام نے سلیکٹڈ وزیراعظم کو مسترد کر دیا، حکومت ہر معاملے میں ناکام ہوچکی، پارلیمان پر بڑی ذمہ داری ہے کہ عوامی امیدوں پر پورا اترے، پارلیمان میں بیٹھے لوگوں کو عوامی مطالبے کو ماننا پڑے گا، 2018 میں اس پارلیمان سے جو غلطی ہوئی اسے درست کیا جائے گا۔

کینسر اسپتال

چیئرمین پیپلزپارٹی نے مزید کہا کہ آپ نے اپنی ماں کے نام پر کینسر اسپتال بنا کر پیسہ کھایا، خاتون اول سے متعلق کہانیوں پر آپ کیا کہتے ہیں ؟ خاتون اول کیلئے بہت احترام ہے، کبھی غلط زبان استعمال نہیں کی۔ انہوں نے الزام عائد کرتے ہوئے کہا کہ علیمہ باجی نے سلائی مشین بیچ بیچ کر اتنا پیسہ کمایا، شہباز شریف سے وقت پر درخواست کریں گے کوئی اچھا وزیر داخلہ رکھیں، فضل الرحمان کو گالی دینے والے آپ ہوتے کون ہیں ؟۔

ووٹوں کی گنتی

تحریک عدم اعتماد کی ووٹنگ کے دوران ووٹوں کی گنتی سے متعلق سوال کے جواب میں بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ حکومت کا مؤقف اس حوالے سے مضحکہ خیز ہے، یہ چلے گا نہیں، ایسا نہیں ہوگا جسا چیئرمین سینیٹ کے انتخاب کے دوران ہوا، سینیٹ الیکشن کی طرز پر دھاندلی کرکے وزیراعظم بچ نہیں سکتے، حکومت گھبرائی ہوئی ہے اس لیے ایسی تجاویز سامنے آرہی ہیں لیکن اس طرح کے ہتھکنڈے چلنے والے نہیں۔

تحریک عدم اعتماد کے حوالے سے اتحادیوں سے رابطوں کے متعلق سوال کے جواب میں بلاول بھٹو کا کہنا تھا کہ ہم پر اعتماد ہیں کہ تحریک کامیاب ہوگی، ہماری خواہش ہے کہ حکومت کے اتحادی تحریک کی کامیابی کے لیے ہمارا ساتھ دیں، اتحادیوں کی جانب سے ہمارا ساتھ دینا کا بہت مثبت پیغام جائے گا۔

BILAWAL BHUTTO

ASIFA BHUTTO

ڈرون

آصفہ بھٹو زرداری

Tabool ads will show in this div