ملک میں زیادہ پیسہ آنےکی وجہ سےپیٹرول اوربجلی کی قیمتیں کم کیں،عمران خان

جس قوم میں انصاف نہیں ہوتا وہ تباہ ہوجاتی ہے،عمران خان
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/2022/03/Ptv-Pm-Imran-Speech-Kamyab-Jawan-Loan-Prog-02-03.mp4"][/video]

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ملک میں زیادہ پیسہ آنے کی وجہ سے ہم نے پیٹرول اور بجلی کی قیمتیں کم کیں۔

وزیراعظم عمران خان نےاسلام آباد کی فیصل مسجد میں کامیاب پاکستان پروگرام کے تحت بلا سود قرضوں کے اجرا کے پروگرام کا آغاز کیا۔

کامیاب پاکستان پروگرام کے تحت نوجوانوں،خواتین،کسانوں کو کم لاگت گھروں کی تعمیر اور کاروبار شروع کرنے کے لیے 2 برس میں کل 407 ارب روپے کےقرضے فراہم کئے جائیں گے۔ اس مدت میں حکومت 56 ارب روپے کی سبسڈی فراہم کرے گی۔

کامیاب پاکستان پروگرام کی تقریب سے خطاب کرتےہوئے وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان ایک بڑے خواب کا نام تھا،ہم نے مثالی اسلامی فلاحی ریاست بننا تھا اور فلاحی ریاست کی طرز مدینہ کی ریاست تھی۔ تاہم ہم اپنے اس راستے پر نہیں چلے، پاکستان کو دنیا میں وہ عزت اورمقام نہیں ملا اور اس کی وجہ اپنے نظریہ سے ہٹنا ہے۔

وزیراعظم نے کہا کہ ایف بی آر نے پہلی بار ریکارڈ ٹیکس اکھٹا کیا۔ ریکارڈ ٹیکس جمع ہونے کی وجہ سے پیٹرول اور بجلی کی قیمت کم کی ہے۔ قوم جتنا ٹیکس ادا کرے گی،لوگوں کی فلاح اور مہنگائی کم کرنے کےلئے لگائیں گے۔

کامیاب پاکستان پروگرام سے متعلق انھوں نے کہا کہ 45 لاکھ خاندان اس پروگرام میں آئے ہیں۔ یہ پروگرام پختونخوا،گلگت بلتستان اور آزاد کشمیر سے شروع کیا گیا۔ اس کے علاوہ جنوبی پنجاب ،تھرپارکر اور بلوچستان میں یہ پروگرام شروع کیا گیا تاہم اب پورے پاکستان میں یہ شروع کیا جارہا ہے۔

انھوں نے مزید بتایا کہ 45 لاکھ خاندان کے شہر میں ایک ایک گھر کو کاروبار شروع کرنے کے لئے 5 لاکھ روپے اور دیہات کے لیے ساڑھے 3 لاکھ روپے سود کے بغیر قرضہ دیا جائے گا۔ اس کے علاوہ 20 لاکھ روپے قرضہ اپنا گھر بنانے کےلیے دیا جائے گا۔ ان خاندان والوں کے ایک فرد کے لیےٹیکنیکل تعلیم کے لیے بھی معاونت دی جائے گی۔

صحت کارڈ سے متعلق انھوں نے بتایا کہ مارچ کے آخر تک پورے پنجاب کے خاندان کے پاس ہیلتھ کارڈ آجائے گا۔اس کارڈ کے ذریعے 10 لاکھ روپے کی ہیلتھ انشورنس ہوگی۔ اس کارڈ کے ذریعے کسی بھی اچھے اسپتال میں علاج کی سہولت ہوگی۔

وزیراعظم نے کہا کہ بیرون ممالک میں انصاف اور میرٹ کا نظام ہے تاہم کم مسلمان ملکوں میں ریاست مدینہ کے اصول نظرآئینگے۔ انھوں نے کہا کہ  جو قوم طاقتور کو چھوڑ کر کمزور کو سزا دیتی ہے وہ تباہ ہوجاتی ہے۔جو قوم نظریہ سے ہٹ جاتی ہے وہ بھٹک جاتی ہے، فلاحی ریاست کمزور طبقے کی ذمہ داری لیتی ہے۔

عمران خان،کامیاب پاکستان پروگرام،IMRAN KHAN

Tabool ads will show in this div