سینیٹ میں اپوزیشن کو ایک بار پھر شکست

حکومت اوگرا ترامیم سمیت 3بل منظور کرانے میں کامیاب
Feb 17, 2022

سینیٹ میں اکثریت رکھنے والی اپوزیشن ایک بار پھر شکست کھا گئی، حکومت اوگرا قوانین میں ترامیم سمیت 3 بلز منظور کرانے میں کامیاب ہوگئی۔ الائیڈ ہیلتھ پروفیشنل کونسل بل پر ووٹ برابر ہوئے تو چیئرمین صادق سنجرانی نے ایک بار پھر اپنا ووٹ حکومتی پلڑے میں ڈال دیا۔

ایوان بالا کا اجلاس کے چیئرمین صادق سنجرانی کی زیر صدارت ہوا، جس میں وزیر مملکت علی محمد خان نے الائیڈ ہیلتھ پروفیشنل کونسل بل کیلئے تحریک پیش کی، رائے شماری پر حکومت اور اپوزیشن کی جانب سے 29، 29 ووٹ آئے، جس پر چیئرمین نے اپنا ووٹ حکومت کے پلڑے میں ڈال کر بل منظور کرادیا۔

اس سے قبل چیئرمین سینیٹ نے آئل اینڈ ریگولیٹری اتھارٹی آرڈیننس سے متعلق دو بل مؤخر کردیئے تھے، علی محمد خان نے بل دوبارہ پیش کئے تو اپوزیشن نے احتجاج کرتے ہوئے واک آؤٹ کردیا، اپوزیشن اراکین کے واک آؤٹ کا فائدہ اٹھاتے ہوئے حکومت نے دونوں ترمیمی بلز منظور کرالئے۔

وزیر مملکت برائے اطلاعات فرخ حبیب نے اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ سينيٹ ميں اوگرا ترميمی بل پر پھر اپوزيشن کو شکست ہوئی يہ حکومت کو نہيں ايک دوسرے کو گرائيں گے۔

انہوں نے مريم نواز سے سوال کيا کہ اخلاقيات کا درس دينے والے بتائيں بی بی شہيد اور نصرت بھٹو کی کردار کشی کيوں کی گئی؟۔ فرخ حبيب نے خبردار کيا کہ سياستدان ہيں تو سیاسی ميدان ميں مقابلہ کريں، کسی کے گھر ميں نہ گھسيں ورنہ قانون حرکت ميں آئے گا۔

نیب قوانین میں ترمیم کے بل منظور

دوسری جانب قومی اسمبلی کی قائمہ کمیٹی برائے قانون و انصاف نے نیب قوانین میں ترمیم سے متعلق حکومت کے دونوں بل کثرت رائے سے منظور کرلئے۔

ریاض فتیانہ کی زیرصدارت اجلاس میں نیب بل کی منظوری پر اپوزیشن نے احتجاج کرتے ہوئے قائمہ کمیٹی کے اجلاس سے واک آؤٹ کردیا۔ اپوزیشن نے اپوزیشن نے چیئرمین کمیٹی کو بھی کڑی تنقید کا نشانہ بنایا۔

SENATE

سینیٹ اجلاس

Tabool ads will show in this div