مونال ریسٹورنٹ سیل کرنےکافیصلہ معطل کرنےکی استدعامسترد

عدالت نے کیس کی سماعت آئندہ ہفتے تک ملتوی کردی۔

 سپریم کورٹ نے اسلام آباد ہائیکورٹ کی جانب سے مونال ریسٹورنٹ کو سیل کا فیصلہ معطل کرنے کی استدعا مسترد کردی۔

سپریم کورٹ میں بدھ 16 فروری کو اسلام آباد کے مونال ریسٹورنٹ کو سیل کرنے کے خلاف اپیل پر سماعت ہوئی۔

مونال کے وکیل مخدوم علی خان نے عدالت کو بتایا کہ سی ڈی اے نے تحریری حکم سے پہلے ہی مونال کو سیل کردیا ہے۔ جسٹس اعجاز الحسن نے ریمارکس دیئے کہ جو کچھ ہوچکا ہے اس کو فی الحال واپس نہیں کرسکتے، سی ڈی اے اور مونال کا تنازع سول عدالت میں زیرالتواء ہے، اسلام آباد ہائیکورٹ نے مقدمہ زیرالتواء ہونے کے باوجود فیصلہ سنادیا۔

جسٹس مظاہر نقوی نےاستفسار کیا کہ کیا اسلام آباد ہائیکورٹ نے مروجہ طریقہ کار سے ہٹ کر فیصلہ کیا ہے؟۔ اس پر مونال کے وکیل نے بتایا کہ شواہد ریکارڈ کیے بغیر ہی اسلام آباد ہائیکورٹ نے فیصلہ جاری کیا، مونال ریسٹورنٹ تو کیس میں فریق ہی نہیں تھا اورہائیکورٹ نے سوموٹو لیتے ہوئے مونال کو سیل کرنے کا حکم دیا، مونال کو سیل کرنے کی استدعا کسی درخواست گزار نے نہیں کی تھی۔

عدالت نے اسلام آباد ہائیکورٹ کا فیصلہ معطل کرنے کی استدعا مسترد کردی اور سپریم کورٹ نے وفاقی حکومت اور فریقین کو نوٹس جاری کردیے۔ عدالت نے کیس کی سماعت آئندہ ہفتے تک ملتوی کردی۔

MONAL RESTURANT

Tabool ads will show in this div