وزیرخزانہ نےپیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافےکاعندیہ دیدیا

حکوم نے یکم فروری کو پیٹرول کی قیمت نہ بڑھانے کافیصلہ کیاتھا
Feb 10, 2022

وزیر خزانہ شوکت ترین نے پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافے کا عندیہ دے دیا ہے۔

جیو کے پروگرام آج شازیب خان زادہ کے ساتھ میں گفتگو کرتے ہوئے وزیرخزانہ شوکت ترین کا کہنا تھا کہ کہ عالمی مارکیٹ میں خام تیل کی قیمت 92 ڈالر فی بیرل تک پہنچ چکی ہے،اس سے حکومت پر دباؤ بڑھ رہا ہے اور پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں اضافہ کرنا پڑے گا۔

اُن کا کہنا تھا کہ حکومت پیٹرولیم منوعات کی قیمتوں کو مصنوعی طور پر کم نہیں رکھ سکتی،اگر عالمی سطح پر قیمتیں بڑھ رہی ہے تو ہمیں  پاکستان میں بھی قیمتوں میں اضافہ کرنا پڑے گا۔

واضح رہے وزیراعظم عمران خان نے یکم فروری کو اوگرا کی پیٹرولیم مصنوعات کی قیمتیں 14 روپے تک بڑھانے کی سمری مسترد کرتے ہوئے قیمتوں میں اضافہ نہ کرنے کا فیصلہ کیا تھا۔

وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ دنیا بھر میں تیل کی قیمتیں بڑھ رہی ہیں مگر اوگرا کی سمری عوام مفاد میں ہی مسترد کی، عوام کو مہنگائی سے بچانے کیلئے ہر ممکن کوشش کریں گے۔

وزیراعظم آفس سے جاری اعلامیے کے مطابق عالمی سطح پر تیل کی قیمتیں مسلسل بڑھنے کے باوجود وزیراعظم نے اضافہ نہ کرنے کا فیصلہ کیا۔ حکومت لوگوں کو مہنگائی سے بچانے کیلئے ہر ممکن کوشش کرے گی۔

اُس وقت وزارت خزانہ شوکت ترین کا کہنا تھا کہ گزشتہ ماہ خام تیل کی عالمی قیمت میں 14.5 فیصد اضافہ ہوا ہے جبکہ پاکستان میں پیٹرولیم پر مقامی سیلز ٹیکس اور لیوی کی شرح بجٹ اہداف سے بہت کم ہے جس کے باعث حکومت سالانہ دو سو  60 ارب روپے نقصان برداشت کر رہی ہے۔ اسکے علاوہ ٹیکسزکی کم شرح کے باعث ہر 15 دن میں تقریبا 30 ارب روپے کا نقصان ہورہا ہے۔

حکومتی اعلان کے مطابق صارفین کو پیٹرول موجودہ قیمت  147.83 روپے اور ڈیزل 144.62 روپے فی لٹر میں ہی دستیاب ہوگا۔ اسکے علاوہ مٹی کا تیل اور لائٹ ڈیزل آئل کی فی لیٹر قیمت بالترتیب 116.48 روپے اور 114.54 روپے ہے۔

Petroleum Price

پیٹرول کی قیمت

Tabool ads will show in this div