سیاست میں آنےکامقصدقانون کی بالادستی اورملک کوفلاحی ریاست بناناتھا،عمران خان

اقتدار میں آکر بھارت سے تعلقات کی بحالی ترجیح تھی
Feb 11, 2022

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/2022/02/Ptv-Pm-Imran-Interview-Fudan-Uni-Director.mp4"][/video]

وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ قانون کی بالادستی اور پاکستان کو فلاحی ریاست بنانے کےلیے سیاست میں آیا تھا۔

وزیراعظم عمران خان نے چین کی فودان یونی ورسٹی کے ڈائریکٹرکو خصوصی انٹرویو دیتے ہوئے کہا کہ سیاست میں آنے کے لیے میرا منشور دو اصولوں پر مبنی تھا۔ ایک قانون کی بالادستی اور دوسرا پاکستان کو فلاحی ریاست بنانا تھا۔ سیاست میں جانے کا فیصلہ جب کیا تو بگڑے ہوئے سیاستدان  ملک کوتباہ کررہے تھے۔

انھوں نے کہا کہ اللہ نے انسان کو بے تحاشا صلاحیتوں سے نوازا ہےلیکن اس صلاحیت کے ساتھ آپ انصاف اس وقت ہی کرسکتے ہیں جب آپ خود کو چیلنج کرتے رہیں۔ جب آپ نےخود کو چیلنج کرنا چھوڑدیا تو زندگی میں ہموار راستے ختم ہوجاتے ہیں۔

وزیر اعظم نے کہا کہ میرا یقین ہے کہ ملک غریب صرف بدعنوانی کی وجہ سے ہوتے ہیں اور یہ قانون کی حکمیت نہ ہونے کی ایک علامت ہے۔ جو ملک طاقتور کو قانون کے نیچے نہیں لاسکتے وہ بنانا ریپبلک بن کر غربت کا شکار ہوجاتے ہیں۔

افغانستان سے متعلق انھوں نے کہا کہ امریکیوں نے افغانستان کی تاریخ کا مطالعہ نہیں کیا۔ ہمیشہ یہ ہی کہا کہ امریکا افغانستان میں عسکری میدان میں کامیاب نہیں ہوسکتا۔ امریکا کے افغانستان میں کوئی واضح مقاصد نہیں تھے اور امریکی جنرلز کو اپنے ہتھیاروں پربہت بھروسہ تھا۔ افغان عوام اپنے ملک پر غیرملکیوں کی حاکمیت قبول نہیں کرتے،وہ باہر سے کنٹرول کو نہیں مانتے۔ امریکا کی ساری منصوبہ بندی غلط منطق پر مبنی تھی۔

وزیراعظم نے خبردار کیا کہ اگر افغانستان میں افراتفری ہوتی ہے اور طالبان کی حکومت کمزور ہوجاتی ہے تو وہ داعش کا مقابلہ کرنے کے قابل بھی نہیں ہوگی۔

پاک چین تعلقات پر وزیراعظم نے کہا کہ سی پیک اور گوادر کی بندرگاہ سے متعلق شکوک سمجھ سے باہر ہیں۔ پاکستان اپنی معیشت کو بہتر کرنا چاہتا ہے اور لوگوں کو غربت سے نکالنا چاہتا ہے اور اس مقصد کے لیے چین سے سیکھنا چاہتے ہیں۔ ان منصوبے کےلیے چین اور پاکستان کے علاوہ کوئی اور ملک بھی سرمایہ کاری کرسکتا ہے۔

بھارت سے متعلق انھوں نے کہا کہ اقتدار میں آکر بھارت سے تعلقات کی بحالی ترجیح تھی۔ بھارت کے ساتھ صرف مسئلہ کشمیر ہی واحد تنازع ہے۔ پاکستان اور بھارت کے درمیان کشمیر علاقائی تنازعہ ہے اور اس کو اقوام متحدہ نے بھی تسلیم کیا ہے۔

عمران خان

IMRAN KHAN