عوامی رابطہ مہم:تحریک انصاف کے جلسوں کا شیڈول تیار

حکومت نے سیاسی پاور شو کا فیصلہ کرلیا
Feb 08, 2022
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/2022/02/jalsa.mp4"][/video]

تحریک انصاف نے سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی کے فیصلوں پر عملدرآمد کےلیے ابتدائی مرحلے میں 4 بڑے جلسوں کا شیڈول تیار کر لیا۔ وزیراعظم اور پارٹی کے دیگر مرکزی قائدین خطاب کریں گے۔

تفصیلات کے مطابق پہلا جلسہ 18 فروری کو منڈی بہاؤالدین میں ہوگا۔ سندھ کے ضلع تھرپارکر کے علاقے اسلام کوٹ میں بھی جلسہ کیا جائے گا جہاں وزیراعظم عمران خان بڑے یتیم خانے کا افتتاح کریں گے۔

جنوبی پنجاب کے جلسے ملتان یا رحیم یار خان ڈویژن میں ہوں گے۔ خیبرپختونخوا میں جلسوں کی تیاری کا ٹاسک پرویز خٹک کو سونپا گیا ہے۔ عوامی رابطہ مہم کے باقی جلسوں کی تاریخیں بھی جلد فائنل کئے جانے کا امکان ہے۔

واضح رہے کہ 7 فروری کو چیئرمین تحریک انصاف عمران خان کی زیرصدارت سینٹرل ایگزیکٹو کمیٹی اجلاس میں بڑے پیمانے پر جلسے شروع کرنے کا فیصلہ کیا گیا تھا۔

 اجلاس کے بعد میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے رہنما تحریک انصاف فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ وزيراعظم عمران خان نے عوامی رابطے کا فيصلہ کيا ہے، وزيراعظم خیبرپختونخوا، پنجاب اوربلوچستان ميں عوامی اجتماعات سےخطاب کرينگے۔

فرخ حبیب کا کہنا تھا کہ پنجاب ميں بھی لوکل باڈيز اليکشن ہونے جارہے ہيں، جلوسوں میں عوام کو حکومتی کارکردگی سے آگاہ کيا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ وزيراعظم  9فروری کو فيصل آباد کا دورہ کرکے صحت کارڈ کا اجراء کريں گے۔

خیال رہے کہ  اپوزیشن جماعتیں بھی حکومت کو گھر بھیجنے کے لیے سرگرم ہیں اور اس سلسلے میں سابق صدر آصف علی زرداری نے کل حکومت کی اہم اتحادی جماعت مسلم لیگ ق کے سربراہ چوہدری شجاعت حسین جبکہ متحدہ قومی موومنٹ کے مرکزی رہنماؤں نے آج مسلم لیگ ن کے صدر شہباز شریف سے ملاقات کی ہے۔

پی ڈی ايم سربراہ فضل الرحمان کا کہنا ہے کہ مائنس ون کيلئے جدوجہد نہيں کی ازسرنو انتخابات چاہتے ہيں۔ پی ڈی ايم اجلاس ميں تحريک عدم اعتماد کی پوزيشن ديکھيں گے جبکہ استعفوں کامعاملہ زيرغورآئے گا۔ انہوں نے کہا کہ معاملات نتائج سميٹنے کی طرف جارہے ہيں۔

دوسری جانب مسلم لیگ ن کی مجلس عاملہ کے اجلاس میں نوازشريف نے حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانےکی مشروط منظوری دے دی ہے۔

اجلاس میں نوازشريف نے حکومت کے خلاف تحریک عدم اعتماد لانےکی مشروط منظوری دیتے ہوئے کہا کہ تحریک عدم اعتماد لانے سے پہلے ہوم ورک مکمل کرلیا جائے، تحريک اس وقت لائی جائے جب کامیابی کا 200 فیصد یقین ہو۔

PTI vs PMLN

Power Show of PTI

PM IK

Tabool ads will show in this div