بلوچستان: ینگ ڈاکٹرزکا ویکسینیشن سینٹر اور صحت مراکز بندکرنیکا اعلان

حکومت کے معاملات طے نہ ہونے پراحتجاج سخت کیاجارہا ہے

ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن بلوچستان نے احتجاج میں سختی لاتے ہوئے کرونا ویکسینیشن سینٹرز اور حفاظتی ٹیکہ جات سمیت صحت سے متعلق تمام مراکز کو بند کرنے کا اعلان کردیا۔

کوئٹہ میں ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے چیئرمین ڈاکٹر بہار شاہ اور صدر حفیظ مندوخیل نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا کہ حکومت کے ساتھ ہمارے معاملات طے نہیں ہوئے، وزیراعلیٰ بلوچستان میرعبدالقدوس بزنجو اور وزیرصحت احسان شاہ کی جانب سے غلط دعویٰ کیا جارہا ہے کہ ینگ ڈاکٹرز کے ساتھ حکومت کے مذاکرات کامیاب ہوچکے ہیں۔

ان کا کہنا تھا ہم گزشتہ کئی ماہ سے احتجاج پر ہیں لیکن ہمارے مسائل حل کرنے کے بجائے حکومت ہمیں دیوار سے لگانا چاہتی ہے، ہم نے مطالبات پر عملدرآمد کیلئے حکومت کو مہلت دی تھی مگر وعدوں اور یقین دہانیوں کے باوجود مطالبات پر کوئی پیشرفت نہیں ہوئی۔

ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن کے رہنماؤں نے مزید کہا کہ حکومتی رویے کے خلاف جمعرات سے اپنے احتجاج میں سختی لاتے ہوئے بلوچستان بھر کے تمام کرونا ویکسینیشن سینٹرز بند کردیں گے، اس کے علاوہ حفاظتی ٹیکہ جات، ٹی بی اور دیگر موذی امراض سے بچاؤ کے مراکز بھی بند کئے جائیں گے۔

ان کا کہنا تھا کہ کل سے ڈسٹرکٹ ہیلتھ افسران اور ڈائریکٹر جنرل ہیلتھ کے دفاتر کی بھی تالہ بندی کی جائے گی۔ انہوں نے دھمکی دی کہ ینگ ڈاکٹرز کسی بھی وقت ریڈزون میں داخل ہوکر وزیراعلیٰ ہاؤس کا گھیراؤ کریں گے اور مطالبات حل ہونے تک احتجاج جاری رکھیں گے۔

بلوچستان

YOUNG DOCTORS ASSOTICATION

ینگ ڈاکٹرز ایسوسی ایشن

Tabool ads will show in this div