یوٹیلیٹی اسٹورز پر ریلیف پلان پرعمل شروع کرنیکے کا فیصلہ

آٹا، دال، گھی کی خریداری پر سبسڈی دی جائیگی
Utility Stores

حکومت نے 120 ارب روپے لاگت کے احساس راشن پروگرام کے تحت یوٹیلٹی اسٹورز پر ماہانہ ایک ہزار روپے تک ریلیف دینے کے پلان پر عمل شروع  کرنے کا فیصلہ کرلیا ہے۔

پہلے مرحلے میں راولپنڈی اور اسلام آباد کے مستحق صارفین کو رعایت ملے گی۔ آٹا 22 روپے کلو سستا، گھی پر 105 روپے جبکہ دالوں پر 55 روپے فی کلو سبسڈی دی جائے گی۔

تفصیلات کے مطابق مستحق صارفین کو یوٹیلٹی اسٹورز پر اشیاء کی خریداری پر ماہانہ ایک ہزار روپے کی رعایت ملے گی، پہلے مرحلے میں راولپنڈی اسلام آباد میں پائلٹ پراجیکٹ شروع کیا جا رہا ہے۔

 ٹارگٹڈ سبسڈی کے تحت 950 روپے والا 20 کلو آٹے کا تھیلا 510 روپے میں دستیاب ہوگا یعنی پورے 440 روپے رعایت ملے گی۔ اسی طرح گھی پر 105 روپے جبکہ دالوں پر 55 روپے فی کلو سبسڈی ملے گی۔

یوٹیلٹی اسٹورز حکام کے مطابق ملک بھر کے 3700 یوٹیلیٹی اسٹورز پر تین بنیادی اشیاء پر بتدریج سبسڈی دی جائے گی۔ پہلے مرحلے میں راولپنڈی اسلام آباد کے 150 ریجینل اسٹورز کا انتخاب کیا گیا ہے، ماہانہ ایک ہزار روپے کی سبسڈی 50 ہزار روپے سے کم آمدن والے خاندانوں کو ملے گی۔

 احساس راشن پروگرام کے تحت اب تک ایک کروڑ 90 لاکھ مستحق خاندانوں کی رجسٹریشن ہو چکی ہے، پروگرام سے ملک کی 53 فیصد آبادی کو فائدہ ہوگا۔

وزیراعظم نے 3 نومبر2021 کو احساس راشن پروگرام کا اعلان کیا تھا، اس پروگرام سے 2کروڑ خاندان مستفید ہوں گے جن کا انتخاب حال ہی میں مکمل ہونے والے احساس سروے کے ذریعے کیا جائے گا، مجموعی طور پر 13کروڑ لوگ یا پاکستان کی 53 فیصد آبادی اس پروگرام سے مستفید ہوگی۔

اس پروگرام کے تحت ہر ماہ آٹا، دال اور گھی/پکانے کے تیل کی خریداری پر فی خاندان کو ایک ہزار روپے کی رعایت دی جائے گی۔ یہ سہولت نیشنل بینک آف پاکستان کے مختص کردہ کریانہ اسٹورز پر دستیاب ہوگی۔

اس پروگرام کے لیے رواں مالی سال کا نصف بجٹ 120 ارب روپے مختص کیا گیا ہے۔ احساس راشن پروگرام کی لاگت وفاق اور احساس راشن مدد میں شامل صوبے مل کر برداشت کریں گے، اس پروگرام میں اب تک پنجاب، خیبرپختونخوا، گلگت بلتستان اور آزاد جموں و کشمیر کی صوبائی حکومتیں پروگرام میں شامل ہو چکی ہیں۔

Ehsas Program

احساس پروگرام

Tabool ads will show in this div