کیچ میں دہشتگردوں کاحملہ،شہدا کوسلام پیش کرتاہوں،وزیراعظم

دہشتگردوں کیساتھ فائرنگ کے تبادلے میں ایک دہشتگرد ہلاک ہوا
Jan 28, 2022

وزیراعظم عمران خان نے کچ میں دہشت گردوں کے حملے کو پسپا کرنے والے 10 شہیدوں کو سلام پیش کیا۔

وزیراعظم عمران خان نے سماجی رابطے کی ویب سائٹ پر ٹویٹ کرتے ہوئے کہا کہ ہمیں محفوظ رکھنے کیلئے ہمارے بہادر سپاہی جانوں کے نذرانے پیش کر رہے ہیں، پاکستان کو ہر قسم کی دہشت گردی سے نجات دلانے کیلئے پرعزم ہیں۔

دوسری جانب وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید نے بھی بلوچستان کے علاقے کیچ میں دہشت گردی کی مذمت کرتے ہوئے جانی نقصان پر دکھ کا اظہار کیا۔

انہوں نے کہا کہ ایف سی اہلکاروں پر حملہ قابل مذمت اور انتہائی تکلیف دہ ہے، وطن کی حفاظت پر مامور اہلکاروں پر حملہ بدترین دہشت گردی ہے، دہشت گرد بزدلانہ کارروائیوں سے قانون نافذ کرنے والے اداروں کے حوصلے پست نہیں کر سکتے، بلوچستان کی ترقی اور ملکی سلامتی کا مشن جاری رہے گا۔

وزیراعلیٰ پنجاب عثمان بدزدار کا کہنا تھا کہ کچ میں سکیورٹی فورسز کی چیک پوسٹ پر دہشت گردوں کے حملے کی جتنی بھی مذمت کی جائے کم ہے، شہید جوانوں کی وطن عزیز کیلئے قربانی کو خراج عقیدت پیش کرتے ہیں، ہماری تمام تر ہمدردیاں شہداء کے لواحقین کے ساتھ ہیں، شہداء نے وطن عزیز کے امن کے لئے اپنا آج قربان کیا، شہداء ہمارا سرمایہ ہیں۔

عثمان بزدار نے کہا کہ مٹھی بھر عناصر دہشت گردی کے ذریعے قوم کے بلند حوصلے پست نہیں کرسکتے، دہشت گردی، انتہا پسندی اور فرقہ واریت کے خلاف پوری قوم یکسو ہے، پاکستان نے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں لازوال قربانیاں دیں، پوری قوم کو شہداء کی قربانیوں پر فخر ہے، شہداء کی قربانیاں رائیگاں نہیں جائیں گی، دشمن پاکستان کو عدم استحکام سے دوچار کرنے کی سازش کر رہا ہے، دشمن کے مذموم عزائم ناکام بنانے کیلئے اپنی صفوں میں اتحاد برقرار رکھنا ہے، قومی یکجہتی اور اتفاق کے ذریعے دشمن کے ناپاک عزائم کو ناکام بنانا ہوگا۔

گورنر پنجاب چوہدری سرور نے کچ بلوچستان میں سیکیورٹی فورسز کی چیک پوسٹ پر دہشت گردوں کے حملے کی مذمت کی اور حملے میں پاک فوج کے شہید جوانوں کو خراج عقیدت پیش کیا۔ انہوں نے کہا کہ شہدا کے لواحقین سے دلی ہمدردی ہے، دہشتگردوں کو ان کے مذموم عزائم میں کامیاب نہیں ہونے دیں گے، مادر وطن کے لئے پاک فوج کی قربانیاں لا زوال ہیں، قوم پاک فوج کے جوانوں کی ملک کے امن کے لیے دہشت گردی کے خلاف جنگ میں قربانیوں کو کبھی فراموش نہیں کر سکتی ہے۔

واضح رہے کہ 25 اور 26 جنوری کی درمیانی شب بلوچستان کے علاقے کیچ میں سیکیورٹی فورسز کی چیک پوسٹ پر دہشت گردوں کے حملے میں 10 جوان شہید ہوگئے تھے، جب کہ پاک فوج کے شعبہ تعلقات عامہ (آئی ایس پی آر) کے مطابق دہشت گردوں کے ساتھ فائرنگ کے تبادلے میں ایک دہشت گرد ہلاک ہوا۔

بیان کے مطابق 'کارروائی کے دوران 3 دہشت گردوں کو حراست میں لیا گیا اور واقعے کے ذمہ داروں کی گرفتاری کے لیے کارروائی جاری ہے'۔ آئی ایس پی آر نے کہا کہ 'مسلح افواج مادر وطن سے دہشت گردوں کے خاتمے کے لیے پرعزم ہے، چاہے اس کے لیے جو بھی قیمت چکانی پڑے'۔

اس سے قبل 24 دسمبر کو ضلع کیچ میں سیکیورٹی فورسز کی چیک پوسٹ پر ہونے والے دہشت گردوں کے حملے میں 2 فوجی اہلکار شہید ہوگئے تھے۔

آئی ایس پی آر نے بتایا تھا کہ دہشت گردوں کے ساتھ ہونے والے فائرنگ کے تبادلے میں ضلع خوشاب سے تعلق رکھنے والے لانس نائیک منظر عباس اور خضدار سے تعلق رکھنے والے سپاہی عبدالفتح شہید ہوگئے۔

اسی طرح 14 دسمبر کو پاک-ایران سرحد کے قریب قائم چیک پوسٹ پر دہشت گردوں کے حملے میں ایک سیکیورٹی اہلکار شہید ہوگیا تھا۔

13 نومبر کو بلوچستان کے علاقے ہوشاب میں انٹیلی جنس اطلاع ملنے پر ہونے والے آپریشن کے دوران فائرنگ کے تبادلے میں 2 فوجی شہید ہوئے تھے۔

Tabool ads will show in this div