جی ٹی ایس بلدیہ میں ہریالی حب پائلٹ پراجیکٹ کاافتتاح

منصوبے سے آرگینک کھاد اور ری سائیکل پلاسٹک حاصل ہوگا
Jan 27, 2022

[video width="1920" height="1080" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/01/WhatsApp-Video-2022-01-27-at-10.40.35-PM.mp4"][/video]

سندھ حکومت نے جی ٹی ایس بلدیہ میں ہریالی حب پائلٹ پراجیکٹ کا افتتاح کردیا۔ ایم ڈی سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ زبیر چنہ کا کہنا ہے کہ ایس ایس ڈبلیو ایم بی اور ٹیئر فنڈ آرگنائزیشن کے اشتراک سے پروجیکٹ سے 21 ٹن آرگینک کھاد حاصل ہوگی، یونیورسٹیز کے طلبہ کو بھی تجربات کیلئے پلیٹ فارم مہیا کیا جائے گا۔

منیجنگ ڈائریکٹر سندھ سالڈ ویسٹ مینجمنٹ بورڈ زبیر احمد چنہ اور ٹیئر فنڈ  کے کلسٹر لیڈ مسٹر مارٹن لیچ نے ضلع کیماڑی بلدیہ جی ٹی ایس پر پائلٹ پراجیکٹ ہریالی حب کا افتتاح کیا۔

اس موقع پرایگزیکٹو ڈائریکٹر آپریشن طارق نظامانی، سیکریٹری بورڈ شہباز طاہر، ٹیئر فنڈ کے کنٹری ڈائریکٹر جوناتھن جانسن، پراجیکٹ ڈائریکٹر سمعیہّ سجاد و دیگر موجود تھے۔

منصوبے سے متعلق بریفنگ میں بتایا گیا کہ ہریالی حب پراجیکٹ کے تحت بنائی گئی ٹرینچز کا ٹوٹل رقبہ ایک ہزار 50 اسکوائر فٹ ہے جبکہ اس میں 80 ٹن کچرے کی گنجائش ہے، منصوبے کے تحت ایس ایس ڈبلیو ایم بی کی ٹیم مخصوص یوسیز سے سوکھا اور گیلا (کچن کا کچرا) الگ الگ اٹھانے کے بعد این جی او کو جی ٹی ایس بلدیہ پر فراہم کرے گا جبکہ اس سلسلے میں یوسیز میں آگاہی مہم چلاکر شہریوں کو مطلع کیا گیا ہے کہ وہ ایس ایس ڈبلیو ایم بی کی ٹیم کو سوکھا اور گیلا کچرا الگ دیں۔

بریفنگ میں بتایا گیا کہ بعد ازاں گیلا کچرا (کچن کا کچرا) الگ کرکے ٹرینچز میں رکھا جائے گا، جہاں سے ٹریٹمنٹ کے بعد کمپوز کی گئی کھاد کو سوکھنے کے بعد پیک کرکے فروخت کیا جائے گا، یہ ٹوٹل 40 دن کا پروسیس ہوگا، جس سے بہترین کھاد حاصل ہوگی۔

اس موقع پر زبیر چنہ نے کہا کہ اس پراجیکٹ کی کامیابی کے بعد اس کا کراچی کے تمام اضلاع، حیدرآباد اور لاڑکانہ میں بھی آغاز کیا جائے گا، کچرے کی ری سائیکلنگ سے ناصرف ماحول صاف ہوگا بلکہ کچرے کو دوبارہ استعمال کے قابل بنایا جاسکتا ہے، اس سے بہترین کھاد حاصل ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ یونیورسٹیز کے طلبہ کی بھی حوصلہ افزائی کیلئے انہیں یہاں پلیٹ فارم مہیا کیا جائے گا، پلاسٹک کو ری سائیکل کرنے کیلئے بھی پلانٹ لگایا جائے گا۔

اس موقع پر کلسٹر لیڈ مسٹر مارٹن لیچ نے سندھ گورنمنٹ اور ایس ایس ڈبلیو ایم بی کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہا کہ اس منصوبے سے کراچی کو فائدہ ہوگا، ماحول صاف اور لوگوں کو کچرے سے پیدا ہونیوالے صحت اور ماحولیاتی مسائل کے بارے میں آگاہی ملے گی، اس معاہدے کا مقصد کچرے میں سے کام کی اشیاء، پلاسٹک وغیرہ کو ری سائیکل کرکے ماحول کو گرین بنانا اور شہریوں کو صحت مند بنانا ہے۔

سمعیہ سجاد نے منصوبے کی تفصیلات بتاتے ہوئے کہا کہ پراجیکٹ ہریالی حب کے تحت مخصوص یوسیز میں گھروں سے کچرا الگ الگ اور محفوظ طریقے سے رکھنے سے متعلق شہریوں کو آگاہی فراہم کی جارہی ہے، ایس ایس ڈبلیوایم بی ضلع ملیر اور کیماڑی کی مخصوص یوسیز سے گھر گھر سے کچرا پہلے ہی اٹھا رہے ہیں اور یہ بات یقینی بنائی جارہی ہے کہ کچرا مکس نہ ہو، ٹیئر فنڈ اپنے پراجیکٹ یو کے ایڈ میچ فنڈڈ پراجیکٹ کے تحت اس کچرے کو اپنے یونٹ ہریالی حب پر دوبارہ استعمال کے قابل بنانے کیلئے آرگینک کچرے سے کھاد اور پلاسٹک کو ری سائیکل کرکے اینٹیں بناکر اسے فروخت کریں گے، ہریالی حب پراجیکٹ سے حاصل ہونیوالی آمدنی ویسٹ مینجمنٹ سسٹم کیلئے مختص کی جائے گی۔

Tabool ads will show in this div