ہنگو:تیل وگیس نکالنے والی غیرملکی کمپنی کے سائٹ پر حملہ

دہشت گرد قانون کی گرفت سے بچ نہیں سکیں گے، پولیس

ہنگو کے علاقے گرگری میں تیل وگیس نکالنے والے غیر ملکی کمپنی کے سائٹ پر دہشتگرد حملے میں ایک چوکیدار جاں بحق جبکہ سپروائزر کو اغوا کرلیا گیا ہے۔

بدھ اور جمعرات کی درمیانی شب نامعلوم عسکریت پسندوں کی جانب سے ضلع کرک اور ہنگو کے سرحدی علاقے میں کارروائی کی پولیس حکام نے تصدیق کرلی ہے۔ پولیس کے مطابق واقعہ میں ایک چوکیدار جاں بحق ہوگئے ہیں  جبکہ دوسرے کے بارے میں حملہ آوروں کی جانب سے آغوا کا خدشہ ہے۔

کرک پولیس نے حملے کا مقدمہ نامعلوم افراد کے خلاف درج کرلیا ہے، ڈی پی او اکرام اللہ خان کا کہنا ہے کہ ملزمان کی تلاش کےلیے سرچ آپریشن شروع کردیا گیا ہے، دہشت گرد قانون کی گرفت سے بچ نہیں سکیں گے۔

ہنگو پولیس کا کہنا ہے کہ دہشت گردوں  کمپنی کے ایک کمپاؤنڈ پر جدید خود کارہتھیاروں سے حملے کے بعد فرار ہوگئے۔ پولیس کے مطابق جس علاقے میں کیمپ کو نشانہ بنایا گیا وہ دور دراز پہاڑی علاقہ ہے۔

وزیراعلیٰ خیبرپختونخوا محمود خان نے واقعہ کے مذمت کرتے ہوئے کہا کہ دہشتگردی میں ملوث عناصر ملک و قوم کی ترقی کے دشمن ہیں۔ محمود خان کا کہنا تھا کہ مغوی سپروائزر کی بازیابی کے لئے اقدامات کیے جائے۔

وزیراعلیٰ محمود خان نے پولیس کو صوبے میں تیل نکالنے والی کمپنیوں کی سیکیورٹی بہتر بنانے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ آئندہ اس طرح کے ناخوشگوار کی روک تھام کے لئے موثر اقدامات اٹھا جائیں۔

دوسری جانب کالعدم تحریک طالبان پاکستان نے حملے کی ذمہ داری قبول کرکے ایک لاپتہ شخص کی اغوا کی بھی تصدیق کرلی ہے۔

خیال رہے کہ رواں ماہ کے شروع سے ہی ملک کے مختلف حصوں میں دہشت حملوں میں اضافہ دیکھا جارہا ہے 17 جنوری کو اسلام آباد میں پولیس اہلکاروں پر دہشت گردوں کی فائرنگ سے ایک پولیس اہلکار شہید جبکہ 3 زخمی ہوگئے تھے جبکہ کالعدم تنظیم کی جانب سے اسی رات دیر اور شمالی وزیرستان میں ہونے والی کارروائیوں میں بھی دو پولیس اہلکار ہلاک ہونے کا دعویٰ کیا گیا تھا۔

اسلام آباد میں 22 جنوری کو پریس کانفرنس کرتے ہوئے وفاقی وزیر داخلہ شیخ رشید کا کہنا ہے کہ تحریک طالبان پاکستان(ٹی ٹی پی) کی شرائط اس قدر سخت تھیں کہ ان سے مذاکرات آگے نہ بڑھ سکے اور انہوں نے خود سیز فائر کی خلاف ورزی کی۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ طالبان کے خلاف فورسز کو کامیابی حاصل ہورہی ہے اور صرف کچھ گروپ اِکا دُکا وارداتیں کررہے ہیں۔اسلام آباد میں 2 دہشت گرد مارے گئے جس کا ٹی ٹی پی نے بھی اعتراف کیا۔

وزیرداخلہ کا کہنا تھا کہ نیشنل ایکشن پلان بن چکا ہے اور ملک میں ایسے ادارے موجود ہیں جو تمام چیزوں پر نظر رکھے ہوئے ہیں۔ انھوں نے مزید کہا کہ افغان طالبان نے ضمانت دی کہ ان کی زمین پاکستان کے خلاف استعمال نہیں ہوگی۔

شیخ رشید کا مزید کہنا تھا کہ  ٹی ٹی پی کی شرائط قبول نہیں کی جاسکتی ہیں، اگر وہ لڑیں گے تو ان سے لڑا جائے گا۔

Tabool ads will show in this div