بلااجازت سویاں کیوں کھائیں، سوتیلی ماں اور باپ کابیٹی پرتشدد

زخمی بچی کو دارالامان منتقل کردیا گیا، میاں بیوی گرفتار

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/01/FSD-Girl-Torture-PKG-25-01-Shahbaz.mp4"][/video]

فيصل آباد ميں بغير اجازت سوياں کھانے پر سوتيلی ماں اور باپ نے بیٹی کو تشدد کا نشانہ بناديا، متاثرہ بچي نے الزام لگايا کہ بھائی کو بھی تشدد کا نشانہ بنايا جاتا تھا تنگ آکر وہ گھر سے بھاگ گيا۔ پوليس نے سوتيلی ماں اور بچی کے والد کو گرفتار کرليا۔ والد کا مؤقف ہے کہ بچی چوری کرتی تھی اس لئے مارا ، آنکھ پر زخم سيڑھيوں سے گرنے کی وجہ سے آئے۔

فیصل آباد کے علاقے منصورآباد  میں پولیس نے بیٹی پر تشدد کے الزام میں سوتیلی ماں اور باپ کو گرفتار کرلیا۔

تشدد کی شکار بچی زينب کا کہنا ہے کہ مجھے میرے ابو اور سوتیلی ماں نے مارا ہے، کوئی بھی چيز کھانے پر اسے مارا جاتا تھا، پوچھے بغیر سویاں کھانے پر سوتیلی ماں آگ بگولہ ہوئی اور بری طرح مارا پيٹا، بھائی کو بھی تشدد کا نشانہ بنايا جاتا تھا، تنگ آکر وہ گھر سے بھاگ گيا۔

فیصل آباد میں والد اور سوتیلی ماں کے تشدد کی شکار بچی کی ویڈیو سوشل میڈیا پر وائرل ہوئی جس کے بعد تھانہ منصورآباد کی پولیس نے کارروائی کرتے ہوئے دونوں میاں بیوی کو گرفتار کیا اور بچی کو بازیاب کراکے چائلڈ پروٹیکشن بیورو منتقل کردیا۔

چائلڈ پروٹیکشن بیورو نے زینب کو تحویل میں لے کر میڈیکل کیلئے اسپتال منتقل کر دیا۔ حکام کا کہنا ہے کہ میڈیکل کروا کر قانونی کارروائی کی جائے گی۔

زينب کے والد نے پوليس کو بيان ديتے ہوئے کہا کہ وہ چوری کرتی تھی جس پر اس کو مارا، آنکھ کے پاس زخم سيڑھيوں پر گرنے کی وجہ سے آئے۔

Tabool ads will show in this div