شرح سود9.75فیصدپربرقرار،اسٹاک مارکیٹ میں تیزی کارجحان

انڈیکس میں 300 سے زائد پوائنٹس کی تیزی
Jan 25, 2022
[caption id="attachment_2141039" align="alignnone" width="800"]PSX outlook in 2021 فوٹو: پی ایس ایکس[/caption]

اسٹاک مارکیٹ 100 انڈیکس میں آج بروز منگل دوران ٹریڈنگ 300 سے زائد پوائنٹس کا اضافہ دیکھا گیا۔

پی ایس ایکس کی ویب سائٹ پر جاری اعداد و شمار کے مطابق کاروباری دن کے دوران 326 پوائنٹس کا اضافہ دیکھا گیا اور 11 بج کر 11 منٹ پر 100 انڈیکس 45 ہزار  253 پوائنٹس کی سطح پر ٹریڈ کررہا تھا۔

رپورٹ کے مطابق سیمنٹ، آٹوموبائل اور ریفائنری سمیت دیگر سیکٹرز کے حصص کی قیمتوں میں اضافہ دیکھا گیا۔

تفصیلات کے مطابق لکی سیمنٹ لمیٹڈ کے شیئر کی قیمت 15.78 فیصد اضافے سے 681 روپے، ٹی انڈس موٹر کمپنی لمیٹڈ کی قیمت 1.91 فیصد اضافے سے ایک ہزار 319 روپے جبکہ آئل اینڈ گیس ڈیویلپمنٹ کمپنی لمیٹڈ کی قیمت 0.02 فیصد کمی سے 87.97 روپے ہوگئی۔

اسٹاک مارکیٹ ماہرین کا کہنا ہے کہ مانیٹری پالیسی میں شرح سود 9.75 فیصد کی سطح پر برقرار رہنے کی وجہ سے سرمایہ کاروں کی حوصلہ افزائی ہوئی ہے اور حصص کی خرید و فروخت میں تیزی دیکھی جارہی ہے۔

وا ضح رہے پیر کو اسٹاک مارکیٹ میں معمولی مندی کا رجحان دیکھا جارہا تھا  کیونکہ سرمایہ کار  مانیٹری پالیسی میں شرح سود سے متعلق ہونے والے فیصلے کا انتظار کررہے تھے کہ آیا اسٹیٹ بینک کی جانب سے شرح سود میں اضافہ کیا جاتا ہے یا نہیں، تاہم اسٹیٹ بینک کی جانب سے شرح سود میں اضافہ نہیں کیا گیا اور مستقبل میں بھی شرح سود نہ بڑھانے کا عندیہ دیا گیا ہے جس کے باعث سرمایہ کاروں کی جانب سے حصص کی خرید کا رجحان زیادہ ہے اور بیشتر سیکٹرز کے شیئرز کی قیمتوں میں بھی اضافہ دیکھا جارہا ہے۔