کے ڈی اے زمینوں پرقبضہ مافیاکا گوٹھ آباد کرنے کاانکشاف

سرجانی ٹاؤن کے رہائشیوں کا کے ڈی اے آفس میں شدید احتجاج
[video width="640" height="352" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/01/WhatsApp-Video-2022-01-24-at-4.57.55-PM.mp4"][/video]

کراچی ڈیولپمنٹ اتھارٹی کی زمین پر گوٹھ آباد کرنے کیلئے قبضہ مافیا کے سرگرم ہونے کا انکشاف ہوا ہے۔ سرجانی ٹاؤن کے رہائشیوں نے ڈی جے کے ڈی اے کے دفتر پر احتجاج کیا اور ڈائریکٹر لینڈ مینجمنٹ (ڈی ایل ایم) کے دفتر میں گھس گئے۔

رپورٹ کے مطابق کراچی کے علاقے سرجانی ٹاؤن کے سیکٹر 13، 14 اور 15 پر قبضہ مافیا گوٹھ کے نام پر آبادی کرنے میں مصروف ہے، مقامی رہائشیوں نے ڈائریکٹر جنرل کراچی ڈیولپمنٹ اتھارٹی کے دفتر پر احتجاج کیا، مظاہرین نے بینرز اٹھارکھے تھے جن پر لینڈ مافیا اور گوٹھ مافیا منظور کے نعرے درج تھے۔

مظاہرین کا کہنا تھا کہ قبضہ مافیا کے کارندے ہماری زمینوں کو گوٹھ کے نام پر فروخت کررہے ہیں، کے ڈی اے کی الاٹمنٹ کے باوجود دھڑلے سے ہماری زمینوں پر قبضہ ہورہا ہے، قبضہ مافیا بلاول گوٹھ کے نام سے زمینوں کی فروخت کررہی ہے۔

مظاہرین نے مزید کہا کہ قبضہ مافیا نے کے ڈی اے کے کاغذات کو ماننے سے بھی صاف انکار کردیا ہے، پولیس، کے ڈی اے سمیت دیگر متعلقہ اداروں کو قبضہ مافیا کیخلاف درخواستوں کے باوجود کوئی کارروائی نہ ہوسکی۔

اس موقع پر مظاہرین ڈائریکٹر لینڈ مینجمنٹ کے دفتر میں گھس گئے اور شدید احتجاج کیا، ڈی ایل ایم مظاہرین کے سامنے ہاتھ جوڑتے رہے۔

ڈائریکٹر لینڈ کے ڈی اے وریل اندھڑ کا کہنا تھا کہ سرجانی سیکٹرز 10/4، 10/5، اور 10/7 میں تقریباً 100 کے قریب 120، 200 اور 400 گز کے پلاٹوں پر قبضہ کیا جاچکا ہے، کے ڈی اے ڈائریکٹر اسٹیٹ اینڈ انفورسمنٹ کی تعیناتی کے بعد الاٹیز کے پلاٹس واگزار کرانے کیلئے کارروائی کی جائے گی۔

واضح رہے کہ فی الحال ڈائریکٹر اسٹیٹ اینڈ انفورسمنٹ کا عہدہ خالی ہے، دس روز قبل خالد ظفر ہاشمی کو سندھ لوکل گورنمنٹ ڈیپارٹمنٹ کے نوٹیفکیشن پر اس عہدے سے ہٹادیا گیا تھا۔

Tabool ads will show in this div