بھارت نےجرائم پیشہ افرادکو دہشت گردی کےلئے استعمال کیا،شیخ رشید

حکومت اور اپوزيشن دہشتگردی کے معاملے پر متحد ہيں،شیخ رشید

وزیرداخلہ شیخ رشید کا کہنا ہے کہ بھارت کو جب یہ اندازہ ہوگیا کہ اب افغانستان سے کچھ ممکن نہیں ہو پارہا تو انہوں نے ملک میں موجود جرائم پیشہ افراد کو بھاری رقوم کے عوض ملک میں دہشت گردی کےلیے تیار کیا۔

سینیٹ اجلاس میں اظہار خیال کرتے ہوئے وزیرداخلہ کا کہنا تھا کہ پاکستان کی سالميت سے ٹکرانے والوں سے ٹکرائيں گے، جوہرٹاؤن دھماکے کے تينوں ملزمان کو سزائے موت سنائی گئی ہے۔

شیخ رشید احمد کا کہنا تھا کہ قومی سلامتی کے معاملات پر مشترکا بیانیہ بنانے کی ضرورت ہے، مقبوضہ کشمیر اور بھارت میں مسلمانوں کے ساتھ مظالم ان کی پاکستان سے محبت کی سزا ہے۔

انہوں نے کہا کہ عمران خان چین کے ساتھ دوستی کو آخری دم تک نبھائیں گے، گوادر اور داسو حملے میں ملوث دہشت گردوں کو گرفتار کرچکے ہیں۔

شیخ رشید کا کہنا تھا کہ ہمارےملک ميں فرقہ وارانہ دہشتگردی بھی ہے، ہم ايران سے بھی بہتر تعلقات چاہتے ہيں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان طالبان کی بات اس ليے کررہا ہے کہ وہاں مسلمان ہيں۔

وزیرداخلہ کا کہنا تھا کہ بلوچستان ميں داعش،ٹی ٹی پی اور بی آر اے و دیگر  تنظیمیں موجود ہيں جبکہ 11 جنوری کو بی این اے کے بننے کے بھی اطلاعات ہیں۔

شیخ رشید احمد کا کہنا تھا کہ افغانستان کے ساتھ سرحد پر 20 جبکہ ایران کے ساتھ 200 کلومیٹر باڑ کا کام ابھی رہتا ہے۔ انہوں نے کہا کہ افغانستان کی طرف  سے باڑ ہٹانے کی جو ویڈیو آئی تھی وہ مین لائن نہیں بلکہ سائڈ لائن تھا۔ وزیرداخلہ کا کہنا تھا کہ بھارت کو افغانستان میں بڑی شکست ہوئی ہے اسلئے وہ نہیں چاہتا کہ ہمسایہ ممالک کے ساتھ ہماری تعلقات بہتر ہوں۔

انہوں نے کہا کہ اپوزیشن 23 مارچ کو نہيں 27مارچ کو آجائے لیکن اگر اپوزیشن بضد ہے تو 23 مارچ کو ہی اسلام آباد آنے کا شوق پورا کرلے۔ شیخ رشید احمد کا کہنا تھا کہ عمران خان نے کہا باہر نکلوں گا تو اور خطرناک ہوجاؤں گا، يہ باتيں اپوزيشن بھی کرتی رہی ہے۔

Tabool ads will show in this div