صدارتی نظام سے متعلق سوال، وزیراعظم کا جواب دینےسے گریز

جب حکومت ملی تو 4بحرانوں کا سامنا ہے
Jan 23, 2022

PM Imran Khan On Call Public 23-01

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/01/PM-on-Sadarti-nizam.mp4"][/video]

وزیراعظم عمران خان نے عوام سے براہ راست گفتگو کے دوران ملک میں صدارتی نظام اور ایمرجنسی سے متعلق سوال پر کوئی جواب دینے سے گریز کیا ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے سوال کے جواب میں کہا کہ میں نے پہلے خطاب میں کہا تھا کہ ایک شور اٹھے گا اور اس تقریرمیں واضع کہا تھا کوئی مفاہمت نہیں ہوگی۔

وزیراعظم نے کہا کہ ان دو خاندانوں نے بھرپور زور لگایا کہ انھیں این آر او ملے لیکن جنرل پرویز مشرف نے مارشل لاء سے زیادہ دونوں خاندانوں کو این آر او دے کر ملک پر ظلم کیا تھا، ہم نے کوئی مفاہمت نہیں کرنی اور اگر میں کوئی این آر او دیتا ہوں تو یہ ملک کے ساتھ سب سے بڑی غداری ہوگی۔

انہوں نے کہا کہ ورلڈ بینک نے سالانہ 5.37فیصد گروتھ ریٹ بتائی ہے، اگر ملک تباہ ہوا ہوتا تو 5.37فیصد گروتھ ریٹ کیسے ہوئی ہے؟ صحافیوں سے بھی کہتا ہوں کہ ملک میں مایوسی نہ پھیلائیں۔

عمران خان نے کہا کہ گورنمنٹ کے یونٹس میں 45ہزار گھر بنا رہے ہیں اور قرض فراہم کرکے لوگوں کو گھر بنانے کی سہولت دی، تعمیراتی شعبے کو ٹیکس چھوٹ بھی دی۔ کنسڑیکشن انڈسٹری میں 30لاکھ گھ ربن رہے ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہماری فصلوں میں ریکارڈ پیداوار ہوئی ہے، 4فصلوں میں ریکارڈ آمدنی ہوئی ہے اور پیسہ کسانوں کو گیا ہے، لارج ایکسل مینو فیکچرنگ میں 10فیصد اضافہ ہوا ہے۔

مہنگائی

عوام کے دیگر سوالوں کے جوابات دیتے ہوئے وزیراعظم عمران خان کا کہنا ہے کہ مہنگائی صرف پاکستان کا مسئلہ نہیں بلکہ پوری دنیا کا ہے اور کرونا کی وجہ سے دنیا بھر میں جو سپلائی کی کمی پیدا ہوئی اس وجہ سے ملک میں حالیہ مہنگائی ہے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ روپے گرنے کی وجہ سے مہنگائی میں اضافہ ہوا ہے اور جس وقت ہمیں حکومت ملی تو ملک کا کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ 20ارب ڈالر تھا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان تیل درآمد کرتا ہے اور اس وجہ سے بجلی، ٹرانسپورٹ سمیت دیگر اشیاء مہنگی ہوئی اور تیل مہنگے ہونے کے اثرات ملک میں پڑنے ہی تھے۔

عمران خان نے کہا کہ امریکا میں 40سالوں میں سب سے زیادہ مہنگائی ہوئی ہے، 30 سال میں یورپ میں سب سے زیادہ مہگائی ہوئی ہے اور اسی طرح برطانیہ، فرانس جیسے ممالک میں بہت مہنگائی ہوئی ہے۔ گھی اور پام آئل کی قیمتوں میں ریکارڈ اضافہ ہوا ہے۔

انہوں نے واضح بتایا کہ مجھے صبح ایک گھںٹے کے اندر ملک کی تمام معلوم حاصل ہوجاتی ہے کہ ملک کے کس طبقے پر کیا گزر رہی ہے۔

ملکی بحران

ایک سوال کے جواب میں وزیراعظم کا کہنا تھا کہ جب حکومت ملی تو ہمیں چار قسم کے بحران کا سامنا تھا۔

وزیراعظم نے بتایا کہ 2018 میں پاکستان بینک کرپٹ ہوچکا تھا، غیر ملکی ذخائر انتہائی کم تھے، مالی خسارہ بھی تاریخی تھا اور بجلی کے گردشی قرضے 480 ارب روپے تھے۔

صحت

صحت کارڈ پر عمران خان نے کہا کہ شوکت خانم اسپتال کے منصوبے سے ہیلتھ کارڈ کا خیال آیا اور اس کے لیے پنجاب نے ہیلتھ کارڈ کے لیے 400 ارب روپے لگائے۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ صدی میں ایک بار ایسی وبا کا سامنا کرنا پڑتا ہے اور یہ کرونا کی پانچویں لہر ہے اس لیے عوام ماسک ضرور پہنیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ ہم نے کاروبار کو بند نہیں کرنا اور ہم نے لاک ڈاون کے بجائے اسمارٹ لاک ڈاون کو متعارف کروایا ہے۔

تعلیم

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ نچلے طبقے کو 60لاکھ اسکالر شپس دی جا رہی ہیں اور 47ارب روپے اسکالر شپس کے لیے مختص کیے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہمارے نصاب میں 3درجہ بندیاں ہیں لیکن اب کلاس5تک یکساں نصاب تعلیم لا رہے ہیں، نبی کی سیرت کو سکھانے کے لیے بھی اقدامات اٹھا رہے ہیں۔

وزیراعظم عمران خان نے کہا کہ کرمنل جسٹس سسٹم میں جلد اصلاحات لارہے ہیں اور ذخیرہ اندوزوں پر ریگولیڑز لا رہے ہیں، میں نے ریگولیڑز کو بلا کر پوچھا معاملہ کیا ہے جس پر ریگولیڑز نے بتایا کہ مافیا کیسز پر اسٹے آڈر لے لیتے ہیں۔

ایک سوال کے جواب میں عمران خان نے کہا کہ پارٹی میں ٹکٹوں کی تقسیم کا معاملہ میں خود دیکھوں گا، رشتہ داری میں ٹکٹ کی تقسیم پر میرٹ اور اہلیت دیکھی جائے گی۔ انہوں نے واضح کیا ہے کہ ہمارا ووٹ بینک اب بھی زیادہ ہے اور اس طرح کی غلطی دوبارہ نہیں دہرائی جائے گی۔

میرا پاکستان میرا گھر ہاؤسنگ فنانس اسکیم کے ذریعے گھر حاصل کرنے والے ایک شخص نے وزیراعظم عمران خان کا فون پر شکریہ بھی ادا کیا۔

وزیراعظم عمران خان نے عوام کو ہدایت کی ہے کہ لوگ سٹیزن پورٹل پر شکایت درج کروائیں کیونکہ میں نے دیکھا ہے زیادہ تر زمینوں پر قبضے سے متعلق معاملات سامنے آتے ہیں۔

Tabool ads will show in this div