مساجد سمیت دیگر عبادت گاہوں کیلئے نئی ہدایات جاری

جمعہ کے خطبے کو مختصر رکھا جائے،
Jan 22, 2022

LAHORE: People offering Taraweeh prayer, as they keep social distance with  each other at historical Badshahi Mosque while mosque decorated with  colorful lights in connection with Mehfil-e-Shabina. - The Frontier Postنینشل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر ( این سی او سی) نے کرونا وائرس کے بڑھتے کیسز پر مساجد اور دیگر عبادت گاہوں کیلئے نئی ہدایات جاری کردی ہیں۔

کرونا وائرس سے متعلق صورت حال پر نظر رکھنے والے ادارے نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر (این سی او سی) نے ملک بھر میں کرونا وائرس کی پانچویں لہر میں شدت اور کیسز میں اضافے کے بعد مساجد سمیت دیگر عبادت گاہوں کیلئے نئی ہدایات جاری کردی ہیں۔

نئی ہدایات کے مطابق مساجد اور عبادت گاہوں میں صرف ویکسین شدہ افراد کو جانے کی اجازت ہوگی۔ عبادت گاہوں میں کم حاضری کو یقینی بنايا جائے۔

جاری اعلامیہ میں کہا گیا کہ مساجد و دیگر عبادت گاہوں میں ماسک پہننا لازمی ہوگا، جب کہ مساجد سے قالین ہٹا دیئے جائیں۔

این سی او سی کے مطابق صفوں اور نمازیوں کے درمیان 6 فٹ کا فاصلہ لازمی ہوگا، بزرگ اپنے گھروں میں عبادت اور نماز کو ترجیح دیں گے۔

اس دوران عوام سے یہ بھی اپیل کی گئی ہے کہ ہاتھوں کو باقاعدگی کے ساتھ سینیٹائز کیا جائے۔

اعلامیہ کے مطابق مساجد میں دروازے اور کھڑکیاں کھلی رکھی جائیں گی اور وینٹی لیشن کا مناسب انتظام کیا جائے۔

این سی او سی نے زور دیا کہ نماز جمعہ کی ادائیگی اور جمعہ کا خطبہ بھی مختصر دورانیے کا ہوگا۔

واضح رہے کہ ملک میں کرونا کی پانچویں لہر تیزی سے پھیل رہی ہے، جان لیوا وائرس سے 24 گھنٹوں کے دوران مزید23 افراد انتقال کرگئے۔

نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر کی جانب سے جاری بیان کے مطابق گزشتہ 24 گھنٹوں کے دوران ملک میں کرونا کی تشخیص کے لیے 59 ہزار 343 ٹیسٹ کیے گئے جن میں سے 7678 افراد میں کرونا وائرس کی تصدیق ہوئی۔

یہاں یہ بات بھی قابل ذکر ہے کہ 19 جنوری کو نیشنل کمانڈ اینڈ آپریشن سینٹر نے 10 فیصد اور اس سے زائد کرونا کیسز والے علاقوں میں ایس او پیز کے نفاذ کا فیصلہ کرتے ہوئے متاثرہ علاقوں میں ان ڈور تقریبات پر پابندی عائد کردی ہے۔ پابندیوں کا اطلاق 30 جنوری تک ہوگا۔

Tabool ads will show in this div