شام:جیل میں کرد فورسز اور داعش کےجنگجو میں تصادم،25افراد ہلاک

حملے میں جيل کے ڈائريکٹر کو بھی قتل کردیا گیا،رپورٹ
Jan 21, 2022

شام میں کرد فورسز کے زیر قبضہ علاقے میں الحسکہ جیل پر داعش کے حملے میں 34 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

عرب میڈیا کے مطابق داعش کے کارندوں نے جیل میں قید اپنے ساتھی چھڑانے کيلئے جيل پر حملہ کيا تھا جس میں جيل کے ڈائريکٹر کو بھی قتل کردیا گیا ہے۔ رپورٹ کے مطابق جيل ميں 5 ہزار داعش کے کارندے قيد تھے جس میں حملے کے دوران 200 فرار ہونے میں کامیاب ہوگئے۔

امریکی حمایت یافتہ فورسز ایس ڈی ایف کا کہنا ہے کہ داعش سے وابستہ لوگ آس پاس کے علاقوں سے اندر داخل میں کامیاب ہو گئے، جن کی ہماری داخلی سیکورٹی فورسز کے ساتھ جھڑپیں ہوئیں۔ رپورٹ کے مطابق جھڑپوں میں داعش کے 16 جبکہ کرد فورسز کے 18 افراد ہلاک ہوگئے ہیں۔

کرد حکام کے مطابق ان کی ایسی متعدد جیلوں میں 50 سے زائد ممالک سے تعلق رکھنے والے لوگ قید ہیں۔ ان قیدیوں کا تعلق فرانس سے لے کر تیونس جیسے ممالک سے ہے تاہم ان ممالک کے حکام عوامی رد عمل کے خوف کی وجہ سے انہیں واپس لینے سے گریزاں ہیں۔

یہ واقعہ ایک ایسے وقت پیش آیا ہے جب غوایرن جیل کے داخلی دروازے سے ٹکرانے والی ایک کار سے بم دھماکہ کیا گیا۔ غوایرن جیل شمال مشرقی شام میں کرد حکام کے زیر کنٹرول نیم خود مختار علاقے میں واقع ہے، جس میں داعش سے وابستہ جنگجوؤں کی ایک بڑی تعداد قید ہے۔

Tabool ads will show in this div