کراچی تیز ہواؤں کے باعث حادثات، اموات 5 ہوگئیں

محکمہ موسمیات نے سردے بڑھنے کی پیشگوئی کردی
Jan 21, 2022

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/01/Wind-Accident-Khi-Pkg-21-01-Ayaz.mp4"][/video]

کراچی میں تيز ہواؤں کے جھکڑ چل پڑے، سائن بورڈز گرگئے جبکہ چھتيں اُڑگئيں، مختلف علاقوں ميں ديواريں گرنے سے جاں بحق افراد کی تعداد 5 ہوگئی، جن میں بچے بھی شامل ہیں۔ جماعت اسلامی کے دھرنے ميں ٹينٹ اُڑ گئے۔ محکمہ موسميات نے شہريوں کو کھمبوں اور سائن بورڈز سے دور رہنے کی ہدايت کردی۔

جمعہ کی دوپہر کراچی ميں اچانک گرد آلود تند و تیز ہوائیں چلنا شروع ہوگئیں، کہیں دیوار گری تو کہیں درخت اکھڑے، تیز ہوائیں چادر کی چھتیں اڑا لے گئیں، کمزور دیواریں گرنے کے باعث شیرشاہ گلبائی، نارتھ ناظم آباد اور گلشن معمار میں تین افراد لقمہ اجل بن گئے، اورنگی سیکٹر 12 میں تيز ہواؤں کے باعث بجلی کا پول گرنے سے ايک شخص زخمی بھی ہوا۔

پاپوش نگر کے سرکاری اسکول کی خستہ حال دیوار تيز ہوا برداشت نہ کرسکی اور ملبے کا ڈھير بن گئی، شیر شاہ جانے والے پل پر لگی ٹن کی چادريں بھی اکھڑ گئی، بلدیہ اسپارکو روڈ کاکڑ ہوٹل کے قریب گھر کی چھت گرنے سے خواتين سميت 3 افراد زخمی ہوگئے، اورنگی ٹاؤن میں بچہ زخمی ہوا، جو بعد ازاں دم توڑ گیا۔

پچاس سے ساٹھ کلومیٹر فی گھنٹہ کی رفتار سے چلنے والی ہواؤں کے باعث ساحل کی ریت لہروں کی صورت میں سڑک پر آگئی۔ ڈائریکٹر موسمیات سردار سرفراز کے مطابق تیز ہواؤں کا سلسلہ رات تک جاری رہنے کا امکان ہے، شہری محتاط رہيں۔

موسم کا حال بتانے والوں نے ہفتے سے کراچی میں سردی کی نئی لہر کی پیشگوئی کردی ہے، رواں ماہ کے آخری ہفتے میں کم سے کم درجہ حرارت 8 سے 9 ڈگری تک پہنچنے امکان ہے۔

Tabool ads will show in this div