مریم نواز کےحکومت گرانے کےبیان پرمسلم لیگ میں اختلاف ہے،شاہدخاقان

سماء کے پروگرام احتساب میں گفتگو
Jan 16, 2022

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/01/SM-SHAHID-KHAQAN-AHTISAB-MONTAGE-16-01-Mukkaram.mp4"][/video]

رہنما ن لیگ شاہد خاقان عباسی کا کہنا ہے کہ مریم نواز کے کوئی بھی طریقہ استعمال کرکے حکومت گرانے کے بیان پر پوری مسلم لیگ کو اختلاف ہے کیونکہ انہی طریقوں کی وجہ سے آج ہم یہاں تک پہنچے ہیں۔

سماء کے پروگرام احتساب میں گفتگو کرتے ہوئے شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ عدم اعتماد اس وقت لائیں گے جب یقین ہو نظام آئین کے مطابق ہے، سودہ کرکے ضمیر بیچ کے ڈیل کرکے اقتدار نہیں چاہتے۔

رہنما ن لیگ کا کہنا تھا کہ ملک میں خرابی کی وجہ یہ ڈیلیں ہیں، ڈیلوں نے جو کچھ پاکستان کو دیا وہ سب کے سامنے ہے،نواز شریف کا ایک مطالبہ ہے حکومت گھر جائے اور شفاف الیکشن ہوں۔ انہوں نے کہا کہ اسٹیبلشمنٹ کے ساتھ کسی قسم کی کوئی بات چیت نہیں ہوئی۔

انہوں نے کہا کہ میں اور مریم نواز پارٹی کے کارکن ہیںٕ لیڈر نواز شریف ہیں، خواجہ آصف کی بات درست ہے بیانیہ شہباز شریف کا چلے گا اور شہباز شریف کا بیانیہ وہی ہے جو مسلم لیگ ن کا ہے۔

رہنما ن لیگ کا کہنا تھا کہ ملک میں ہر الیکشن چوری ہوا ہے، جو بھی حکوت آئی عوام کی نمائندگی کیلئے نہیں آئی،خاص مقصد کیلئے لایا گیا۔ ای وی ایم الیکشن کے ںظام کی تباہی ہے جب تک الیکشن چوری ہوں گے ملک کا نظام ٹھیک نہیں ہوسکتا۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ اپوزیشن کے 12 ارکان اجلاس میں نہیں تھے ان کی مجبوریاں تھیں جبکہ وزراء اور اتحادی منی بجٹ میں ووٹ دینے کو تیار نہیں تھے، جس دن بیساکھی ہٹے گی حکومت اکثریت کھو بیٹھے گی۔

انہوں نے کہا کہ بات کرنے کی واحد جگہ پارلیمان ہی ہے، لانگ مارچ مسائل کو اجاگر کرنے کا طریقہ ہے، عوامی اجتماع سے حکومت پر کوئی پریشر نہیں پڑتا۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ پارٹی میں کسی نے مطالبہ نہیں کیا کہ نواز شریف واپس آئیں، ایاز صادق نے جو بات کی وہ ان کی سوچ میں ہوگی جب ایازصادق سے پوچھا کہ آپ نے نواز شریف کی واپسی سے متعلق کیا بیان دے دیا تو جواب ملا سال تو نہیں بتایا تھا۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ یہ حقیقت پاکستان میں گیس کم ہوتی جارہی ہے مگر ایل این جی چھوڑ کر فرنس آئل امپورٹ کرنا 100 فیصد کرپشن ہے۔

انہوں نے کہا کہ حکومت میں 18 لوگ ایسے ہیں جن کا کام صرف ٹی وی پر جھوٹ بولنا ہے، حکومت کا میڈیکل بورڈ یہاں ہے،مریض لندن میں ہے۔

شاہد خاقان عباسی کا کہنا تھا کہ نواز شریف اسپتال میں داخل نہیں تھے اس لیے ویزے میں توسیع نہیں ہوئی، نواز شریف علاج کروا کر واپس آئیں گے۔

Tabool ads will show in this div