ٹرمپ کیخلاف دھمکی آمیزویڈیو:ٹویٹر نےخامنہ ای کا اکاؤنٹ معطل کردیا

خطے میں ایران کی تخریبی سرگرمیوں کا حصہ ہے، پینٹاگون
Jan 16, 2022

مائیکرو بلاگنگ ویب سائٹ ٹوِئٹر نے سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کو قتل کرنے کی فرضی ویڈیو نشر کرنے  کے بعد ایرانی رہنما علی خامنہ ای کا اکاؤنٹ معطل کر دیا۔

ایرانی رہبر اعلی آیت اللہ سید علی خامنہ ای کی ویب سائٹ پر جاری ویڈیو کلپ میں ایک ڈرون حملہ میں سابق امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کی ہلاکت کی فرضی منظر کشی کی گئی ہے۔

خامنہ ای نے یہ ویڈیو کلپ دو سال قبل ایرانی قدس فورس کے کمانڈر قاسم سلیمانی کے قتل کے پس منظر میں شائع کیا تھا۔

عرب میڈیا نے ایرانی خبررساں ایجنسی کے حوالے سے لکھا کہ ٹوئٹر نے خامنہ ای کا سرکاری اکاؤنٹ بند کر دیا۔ روپورٹ کے مطابق ٹویٹر نے یہ قدم اس وقت اٹھایا جب انہوں نے ڈونلڈ ٹرمپ کے قتل کی نقل کرنے والی کارٹون ویڈیو دوبارہ پوسٹ کی تاکہ قاسم سلیمانی کے قتل میں ان کے ملوث ہونے کا بدلہ لیا جا سکے۔

وائٹ ہاؤس کی پریس سکریٹری جین پساکی نے ایک سوال کے جواب میں ایرانی سپریم لیڈر کی ویب سائٹ پر پوسٹ کی گئی ویڈیو پر تبصرہ کرنے سے انکار کر دیا تاہم امریکی محکمہ دفاع پینٹاگون کے ترجمان جان کربی نے خامنہ ای کے ٹوئٹر اکاؤنٹ پر تبصرہ کرتے ہوئے کہا کہ ہم اس سے آگاہ ہیں، ایران خطے میں تخریبی سرگرمیوں کا حصہ اور ہماری سلامتی کے لیے خطرہ سمجھتے ہیں۔

خامنہ ای کی ویب سائٹ نے وہ وڈیو کلپ بھی شائع کیا جو 3 جنوری 2020 کو فجر کے وقت بغداد بین الاقوامی ہوائی اڈے کے قریب ایک فضائی حملے میں مارے جانے والے سلیمانی کے قتل کے بدلے میں ٹرمپ کے قتل کی نقل پر مبنی ہے۔

Tabool ads will show in this div