سندھ ميں تعليمی ادارے بند نہيں ہوں گے،فیصلہ

شادی ہالز،مارکيٹس ميں ماسک لازمی قرار
Jan 16, 2022

سندھ ٹاسک فورس کے اجلاس ميں فیصلہ کیا گیا کہ کراچی سميت سندھ بھر ميں تعليمی سرگرمياں جاری رہيں گے جبکہ شادی ہالز مارکيٹس اور عوامی مقامات پر ماسک پہننا لازم قرار دے ديا گيا۔

وزيراعلیٰ سندھ مراد علی شاہ کی زير صدارت کرونا کی صورتحال پر صوبائی ٹاسک فورس کے اجلاس ميں اہم فيصلے کئے گئے۔ فيصلہ کيا گيا ہے کہ کراچی ميں کورونا کے پھيلاؤ کی شرح ميں مسلسل ريکارڈ اضافے کے باوجود تعليمی ادارے کھلے رہيں گے۔

کراچی سميت سندھ بھر کے شادی ہالز،مارکیٹس اور عوامی مقامات پر ماسک پہننے کو لازمی قرار دیا گيا ہے، اجلاس ميں فيصلہ کيا گيا ہے کہ جو سرکاری افسر ماسک نہیں پہنے گا اس کو جرمانہ کیا جائے گا۔ جرمانے میں ایک دن کی تنخواہ کی کٹوتی کرنے کی بھی تجویز دی گئی۔

مارکیٹس میں صرف ويکسينيٹڈ افراد کے داخلے کی اجازت ہوگی جبکہ انتظامیہ کيلئے ویکسی نیشن کارڈ کا ريکارڈ چیک کرنا لازمی ہوگا۔ سندھ ٹاسک فورس نے شادی کی تقریبات میں کھانا باکس میں دینے کی ہدایت کی ہے۔

وزيراعلیٰ سندھ کا کہنا تھا کہ کورونا کیسز میں اضافہ احتیاطی تدابیر نہ اپنانے کا نتیجہ ہے عوام تعاون کریں گے تو کورونا کی موجودہ لہر پر بھی کنٹرول ہوجائے گا۔

صوبائی حکومت نے سندھ بھر ميں ویکسی نیشن مہم تیز کرنے اور ايس او پيز پر سختی سے عملدرآمد کرانے کا بھی فیصلہ کیا ہے۔