عدالتی حکم پرجوکووچ کاویزا بحال، آسٹریلین اوپن میں شرکت تاحال مشکوک

حکومت کو انہیں ہرجانہ ادا کرنے کا بھی حکم دیا گیا ہے۔

آسٹریلیا کی عدالت نے سربیا سے تعلق رکھنے والے نمبر ون ٹینس کھلاڑی نواک جوکووچ کو ملک میں داخلے کی اجازت دے دی۔

غیر ملکی خبر رساں ادارے انڈپینڈنٹ کی رپورٹ کے مطابق آسٹریلوی عدالت نے حکومت کی جانب سے ٹینس اسٹار نواک جوکووچ کا ویزا منسوخ کرنے کا فیصلہ کالعدم قرار دیتے ہوئے انہیں ہرجانہ بھی ادا کرنے کا حکم دیا ہے۔

رپورٹ کے مطابق آسٹریلیا کی عدالت کی جانب سے جاری فیصلے کے بعد سربیا کے ٹینس اسٹار کو فوری طور پر رہا کیے جانے کا امکان ہے جبکہ حکومتی وکیل نے بتایا کہ نواک جوکووچ اب آزاد ہیں اور وہ اپنی مرضی سے جب چاہیں آسٹریلیا چھوڑ سکتے ہیں۔

آسٹریلوی جج نے اپنے فیصلے میں کہا کہ ٹینس کے سپر اسٹار نوواک جوکووچ کو امیگریشن حراست سے رہا کیا جائے کیوں کہ حکومت کی جانب سے ٹینس اسٹار کے ملک میں داخلے کے لیے ویزا منسوخ کرنے کا فیصلہ ’غیر معقول‘ تھا تاہم حکومتی وکلا نے اسرار کیا ہے امیگریشن حکام اب بھی ان کا ویزا ختم کرنے کا اختیار رکھتے ہیں۔

اس فیصلے کے بعد عالمی نمبر ون کے آسٹریلین اوپن میں ریکارڈ 21 واں گرینڈ سلیم ٹائٹل جیتنے کا موقع پیدا ہو گیا ہے۔

خیال رہے کہ 6 جنوری 2022 کو آسٹریلیا نے کوویڈ-19 پروٹوکولز (ایس او پیز) کی خلاف ورزی کرنے پر پرٹینس کے عالمی نمبر ون کھلاڑی نوواک جوکووچ کا ویزا منسوخ کردیا تھا، وہ آسٹریلین اوپن ٹینس ٹورنمنٹ میں شرکت کے لئے ملیبرن پہنچے تھے۔

ائیرپورٹ حکام نے سربیا سے تعلق رکھنے والے ٹینس اسٹار کوویکسین سے اسثنیٰ اور غلط ویزا پر روکا جبکہ جوکووچ کو ڈی پورٹ کرنے کا بھی فیصلہ کیا گیا تھا۔

جوکووچ سے ائیرپورٹ حکام نے 8 گھنٹے پوچھ گچھ کی جس کے بعد ان کا ویزا منسوخ کردیا گیا۔

آسٹریلین اوپن میں شرکت کرنے والے کھلاڑیوں اور عملے کے لئے ویکسینیشن لازمی ہے یا پھر کسی آزاد پینل کے ذریعے استشثنیٰ حاصل ہو۔

Tabool ads will show in this div