بینائی سےمحروم بچے فٹبال کیسے کھیلتے ہیں؟

جانیے اس رپورٹ میں
[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/01/Blind-FootBall-Academy-Khi-Pkg-07-01-Ar.mp4"][/video]

پاکستان میں بلائنڈ کرکٹ کے بعد فٹبال کے لیے کراچی میں اکیڈمی قائم کردی گئی۔

کراچی میں ایک ويلفيئر اسکول نے بینائی سے محروم فٹبالرز کے لیے اکیڈمی قائم کی ہے جس میں بچوں کو ٹریننگ دی جاتی ہے، آنکھوں سے محروم کھلاڑی ایک دوسرے کو تالی بجا کر ایک دوسرے کو مخاطب کرتے ہیں اور پھر ان کوبال پاس کرتے ہیں۔

کوچ کا کہنا ہے کہ بینائی نہ ہونے کے باعث کھلاڑی آپس میں ٹکرا نہ جائیں اس کے لیے باقاعدہ تربیت دی جاتی ہے، نوجوان کھلاڑیوں نے سماء سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ ہم ہاتھ آگے کر کے بھاگنےکی پريکٹس کرتے ہیں تاکہ کسی چيز سے نہیں ٹکرائيں۔

فٹبال ٹيم کےکوچ کا مزید کہنا تھا کہ کراچی میں اکيڈمی کا قیام کسی چيلنج سے کم نہیں تھا تاہم ہمارا مقصد ان بچوں کو ہر وہ کام کروانا ہے جو عام لوگ کرتے ہيں۔

کوچ بتایا کہ کھيل کے ساتھ نابينا کھلاڑيوں کو فٹ رکھنے کيلئے فزيکل ايکٹی ويٹی بھی کرائی جاتی ہے تاکہ انکو دیگر سرگرمیوں سے بھی آگاہی فراہم کی جاسکے۔

Tabool ads will show in this div