دسمبر کا شاعری اور رومانوی جذبات سے کیا تعلق ہے؟

کسی کو ہجر کھا گیا کسی کو فراق نے آلیا

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/12/December-Breakup-Lhr-Khurram-Pkg-29-12.mp4"][/video]

دسمبر کے سرد لمحے کسی کو گنگنانے پر مجبور کرديتے ہيں تو کسی کا مزاج شاعرانہ کر دیتا ہے۔

کسی کو ہجر کھا گیا کسی کو فراق نے آلیا اور کسی کو اداس لمحوں نے گھیرا ہے، دسمبر اکثر دل والوں کا یہی حال کرتا ہے۔

یادوں کی شال اوڑھ کر آوارہ گردیاں کاٹی ہیں ہم نے یوں ہی دسمبر کی سردیاں

دسمبرکی سرد رتیں عشقانہ مزاج رکھنے والوں کو اکثر گنگنانے پہ مجبور کر دیتے ہیں۔

یہ سال بھی اداسیاں دے کر چلا گیا تم سے ملے بغیر دسمبر چلا گیا

وہ حضرات جن کا شعر سے کوئی تعلق نہیں ہے وہ بھی دسمبر کے موسمی شاعر بن جاتے ہیں۔

دسمبر کی شب آخر نہ پوچھو کس طرح گزری یہی لگتا تھا ہر دم وہ ہمیں کچھ پھول بھیجے گا

دسمبر کی سرد شامیں اور تاریک راتیں کیوں گنگنانے یا شاعری پر مجبور کرتی ہے، شعرا حضرات اس کی ذمہ داری لمبی راتوں پر بھی ڈالتے ہیں۔

تیری یاد کی برف باری کا موسم سلگتا رہا دِل کے اندر اکیلے ارادہ تھا جی لو گا تجھ سے بچھڑ کر گزرتا نہیں اک دسمبر اکیلے

اور کچھ لوگوں کا ماننا ہے کہ دسمبر کا تو کوئی قصور نہیں ہوتا قصور تو سارا انسان کا اپنا ہوتا ہے۔

دسمبر میں کہا تھا ناں کہ واپس لوٹ آؤ گے ابھی تک تم نہیں لوٹے دسمبر لوٹ آیا ہے

بتا ذرا ، کونسی بہار لے کے آیا ہے جنوری تم تو کہتے تھے کہ بہت ویران ہے دسمبر

دسمبر سے متعلق بہت سے گانے بھی وائرل ہوئے جس میں عامر سلیم کا گانا ’دسمبر کا مہینہ‘سمیت دیگر شامل ہیں جبکہ سب سے زیادہ مشہور ابرار الحق کا گانا ’بھیگا بھیگا سا دسمبر ہے‘ وائرل ہوا۔