چودہ سال بعدبھی بینظیرقتل کیس منطقی انجام تک نہ پہنچ سکا

یہ کیس سالوں تک راولپنڈی کی انسداد دہشت گردی عدالت میں چلتا رہا

سابق وزيراعظم بینظیر بھٹو کی شہادت کو 14 برس بیت گئے ليکن ان کے قتل کا کيس تاحال اپنے منطقی انجام تک نہیں پہنچ سکا۔

ستائیس دسمبر2007 کو لیاقت باغ کے تاریخی میدان میں انتخابی جلسے سے  خطاب کے بعد  زور دار دھماکے میں بینظیر بھٹو سمیت 20 افراد جاں بحق ہوگئے تھے۔

بینظیر قتل کیس سالوں تک راولپنڈی کی انسداد دہشتگردی عدالت میں چلتا رہا، پانچ ملزمان کو بری جبکہ دو پولیس افسران سابق ڈی آئی جی سعود عزیز اور ایس پی خرم شہزاد کو 17، 17 سال قید اور 20 لاکھ روپے جرمانے کی سزا ہوئی۔

چودہ سال گزرنے کے باجود یہ کیس کسی منطقی انجام کو نہیں پہنچا ہائی کورٹ میں ابھی ملزمان کی حاضریاں پوری نہیں ہوئیں۔   

تبولا

Tabool ads will show in this div

تبولا

Tabool ads will show in this div