لاہور: گھرميں پُراَسرار آتشزدگی دو بہنوں کی جان لے گئی

خاتون پروفيسر بچوں کو ٹيوشن پڑھاتی تھيں

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/12/Fire-Death-Lhr-Pkg-26-12.mp4"][/video]

لاہورميں ایک ريٹائرڈ خاتون پروفيسر اور اُس کی بہن گھر ميں آگ لگنے سے جاں بحق ہوگئيں۔

بہتر سالہ درشہوار ريٹائرڈ  پروفيسر اور اپنی ستر سالہ بہن ناہيد کے ساتھ  ٹاون شپ ميں رہائش پذير تھيں۔ در شہوار ريٹائرمنٹ کے بعد محلے کے بچوں کو پڑھاتی تھيں جبکہ ناہيد غير شادی شدہ اور ذہنی توازن بھی ٹھيک نہيں تھا۔

تفصیلات کے مطابق شام سوا چار بجے کے قريب کمرے ميں اچانگ آگ بھڑک اٹھی جس نے دونوں بہنوں کو اپنی لپيٹ ميں لے ليا۔ اطلاع ملنے پر ريسکيو ٹيم  نے موقع پر پہنچ کر آگ پر قابو پايا جبکہ فرانزک ٹيم نے شواہد اکٹھے کرليے۔

اہل علاقہ کے مطابق گھر ميں تين بہنيں رہائش پذير تھيں ، ايک بہن بالائی منزل جبکہ ناہيد اور در شہوار گراونڈ فلورپر مقيم تھيں۔ پوليس نے لاشوں کو قبضہ ميں ليکر مردہ خانے بھجوا ديا ، واقع کی مختلف پہلووں پرتفتيش جاری ہے۔

گھرميں پُراَسرارآتشزدگی سے متعلق حکام کا کہنا ہے کہ آگ حادثاتی طور پر لگی يا لگائی گئی حقائق تفتيش کے بعد ہی سامنے آئيں گے۔

Tabool ads will show in this div