کراچی: شہریوں نےگرین لائن بس سروس کو تفریح کاذريعہ بناليا

گرین لائن وائی فائی اور موبائل چارجنگ پورٹ کی سہولیات میسر

طويل عرصے سے گرين لائن بس چلنے کے منتظر شہريوں نے بس کے سفر کو تفريح کا ذريعہ بنا ليا ہے آج دوسرے روز بھی آزمائشی بنياد پرگاڑياں چليں تو شہريوں کی بڑی تعداد ٹکٹ خريد کر بس پرسوار ہوکر چھٹی سے لطف اندوز ہوئے۔

چھٹی کے روز جديد بس پرسفر کے مزے لينے کيلئے شہريوں نے دوسرے روز بھی سرجانی سے نمائش کا سفر کيا، شہریوں کا کہنا ہے کہ عمران خان حکومت نے کراچی والوں کو بہت اچھی سہولت دی ہے۔

شہریوں کی بڑی تعداد نے فیملیز کے ساتھ سرجانی سے نمائش اور پھر دوبارہ ٹکٹ لےکر واپسی کا سفریادگار بنایا۔ خواتین کا کہنا تھا کہ ہم حیدری سے نمائش آئے اب دوبارہ یہاں سے حیدری جارہے ہے جبکہ کچھ لوگوں کا کہنا تھا کہ ہم سرجانی سے نمائش آئے اب یہاں گھوم کر واپس سرجانی جارہے ہیں۔

گرین لائن بس کے لیے نمائش چورنگی پرزیرزمین بنایا گیا خوبصورت انڈرپاس بھی شہریوں کی توجہ کامرکزبنا ہوا ہے۔

خیال رہے کہ کراچی ميں گرين لائن بسيں 25 دسمبر سے آزمائشی بنيادوں پر چلنا شروع ہوگئی ہيں۔ ابتدا میں بسيں صبح آٹھ بجے سے دوپہر 12 بجے تک چليں گی جس کے بعد 10 جنوری سے باقاعدہ کمرشل آپريشن کا آغاز ہوگا۔ دوران سفر مسافر وائی فائی اور موبائل چارجنگ پورٹ بھی استعمال کرسکتے ہیں۔

گرین لائن بس منصوبے کیلئے چین سے 80 بسيں منگوائی گئی ہیں لیکن شروع میں 25 بسیں چلائی جا رہی ہیں جبکہ اسٹاپس کی تعداد بھی کم رکھی گئی ہے۔

گرین لائن بس کی نگرانی کیلئے سی سی ٹی وی کیمرے بھی نصب ہیں جبکہ بس کا روٹ سرجانی ٹاؤن سے نمائش چورنگی تک 22 کلو ميٹر ہے، بس مزار قائد کے سامنے انڈر پاس سے ہوتی ہوئی نمائش چورنگی پہنچے گی۔

گرین لائن بسوں کا کمرشل آپریشن شروع ہونے پر سرجانی سے نمائش تک یومیہ ایک لاکھ 35 ہزار شہری ٹرانسپورٹ کی جدید سہولت سے فائدہ اٹھا سکیں گے۔

Tabool ads will show in this div