سپریم کورٹ کاخیبرپختونخوامیں زلزلےسے متاثرہ اسکولوں کی تعمیرمکمل کرکےرپورٹ دینےکاحکم

چیئرمین ایرا کو آئندہ سماعت پر ذاتی حیثیت میں پیش ہونے کا حکم

سپریم کورٹ نے خیبرپختونخوا میں زلزلہ زدہ علاقوں کے اسکولوں کی تعمیر 6 ماہ میں مکمل کرکے رپورٹ دینے کا حکم دے دیا۔

سپریم کورٹ نے منگل کو خیبرپختونخوا میں زلزلے سے متاثرہ اسکولوں کی دوبارہ تعمیر کےازخود نوٹس کیس کی سماعت ہوئی۔ عدالت نے صوبائی حکومت کو6 ماہ میں اسکولوں کی تعمیرمکمل کرنےکا حکم دے دیا۔ سپریم کورٹ نےچیئرمین ایرا کو آئندہ سماعت پر ذاتی حیثیت میں پیش ہونے کا حکم بھی دیا۔

چیف جسٹس نے ریمارکس دئیے کہ ایسا لگتا ہےکہ زلزلہ متاثرہ اسکول ہمیشہ زیرِتعمیر ہی رہیں گے۔6 ماہ بعد اسکولز کی تعمیرکی رپورٹ نہ پیش کی تو توہین عدالت کی کارروائی ہوگی۔

جسٹس اعجازالحسن نے استفسار کیا کہ ایک ڈیڈ لائن بتائیں کب اسکولزکی تعمیر مکمل ہو کرفعال ہوجائیں گے؟۔ خیبرپختونخوا حکومت کے وکیل نے بتایا کہ زلزلے سے  متاثرہ تمام اسکولوں کی تعمیر 70 فیصد مکمل ہوچکی ہے۔ موسم سرما کے دوران شمالی اضلاع میں تعمیراتی کام مکمل بند رہتا ہے۔

انھوں نے عدالت سےمارچ کے بعد 2 ماہ کا وقت دینے کی استدعا کردی۔سپریم کورٹ نے صوبائی حکومت کی درخواست منظور کرتے ہوئے تعمیر مکمل کرکے  رپورٹ 6 ماہ میں پیش کرنے کا حکم دے دیا۔

 واضح رہے کہ جن علاقوں اسکولوں کی تعمیر کا حکم دیا گیا ہے اس میں ایبٹ آباد، مانسہرہ، بٹ گرام، کوہستان اور تورغر شامل ہیں۔

Tabool ads will show in this div