متحدہ عرب امارات میں سینما سینسرشپ ختم کرنے کا اعلان

عمر کی نئی حد بندی بھی متعارف کرادی گئی

متحدہ عرب امارات کے میڈیا ریگولیٹری دفتر نے سینما گھروں میں نئی بین الاقوامی  فلمیں بغیر کسی سینسرشپ کے ریلیز کرنے کا اعلان کردیا۔

عرب نیوز کی رپورٹ کے مطابق اس فیصلے کا مطلب ہے کہ بین الاقوامی فلموں کا کچھ مواد سینسر شپ  کی نذر ہو جاتا تھا لیکن اب ایسا نہیں ہو گا۔

یو اے ای کے میڈیا ریگولیٹری آفس نے وضاحت کی ہے کہ قبل ازیں 18 سال سے کم عمر افراد کے لیے جو فلمیں نہیں تھیں اب اس میں عمر کی حد کا اضافہ کر کے  عمر کی نئی حد بندی21 سال یا اس سے زائد متعارف کرائی گئی ہے۔

امارات کے میڈیا ریگولیٹری آفس نے ایک ٹویٹ میں کہا  کہ عمر کی نئی درجہ بندی کے مطابق اب فلموں کو ان کے بین الاقوامی ورژن کے مطابق سینما گھروں میں دکھایا جائے گا۔

ٹویٹ میں مزید کہا گیا کہ عمر کی یہ درجہ بندی ملک میں فلموں کے مواد کے معیار کی بنیاد پر دی گئی ہے۔

ساتھ ہی میڈیا ریگولیٹری آفس نے سینما میں داخلے کے لیے شائقین کی عمر کی حد بندی کی اہمیت پرخصوصی طور پر زور دیا ہے۔

اس حوالے سے جاری پیغام میں کہا گیا ہے کہ سینما گھروں کو فلم بینوں کے لیے عمر کی اس نئی درجہ بندی پر سختی سے عمل کرنا چاہیے، جس کے لیے سینما میں آنے والوں کی عمر کے ثبوت اور شناختی دستاویزات کی جانچ کرنے کی ضرورت ہوگی۔

Tabool ads will show in this div