بجلی کی قیمت میں 4.33 روپے اضافے کا امکان

اضافے سے صارفین پر 40 ارب روپے کا بوجھ پڑے گا
فائل فوٹو

سینٹرل پاور پرچیزنگ ایجنسی (سی پی سی اے) نے نیپرا کو ایک ماہ کے لیے بجلی کی قیمت میں 4 روپے 33 پیسے فی یونٹ مہنگی کرنے کی سفارش کردی۔

سی پی پی اے کا کہنا تھا کہ نومبر میں پیشگی پیداواری ٹیرف 3.73 روپے فی یونٹ تھا جبکہ بجلی کی پیداواری لاگت 8.07 روہے فی یونٹ رہی۔ علاوہ ازیں ڈیزل پر27 روپے 20 پیسے فی یونٹ، فرنس آئل پر 20 روپے 27 پیسے فی یونٹ اور ایل این جی پر 17  روپے 26 پیسے فی یونٹ میں بجلی پیدا ہوئی۔ اس کے علاوہ ایران سے گزشتہ ماہ 13 روپے 35 پیسے میں بجلی درآمد کی گئی، لائن لاسز کی مد میں 20 پیسے فی یونٹ کو بھی بجلی مہنگی کرنے کا جواز ٹھہرایا گیا۔

نیپرا نے سی پی پی اے کی درخواست پر 29 دسمبرکو سماعت کرے گا۔

درخواست منظور ہونے کی صورت میں بجلی کے صارفین پر ایک ماہ کے لیے 40 ارب روپے سے زائد کا بوجھ پڑے گا۔

اس سے قبل نیپرا نے ایک ماہ کیلئے بجلی 4.74 روپے فی یونٹ مہنگی کی تھی، نوٹیفکیشن کے مطابق قیمت میں اکتوبر کے فیول پرائس ایڈجسٹمنٹ کی مد میں اضافہ کیا گیا تھا۔

نیپرا کی جانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق بجلی کی قیمت ایک ماہ کیلئے 4 روپے 74 پیسے فی یونٹ مہنگی کردی گئی تھی جس کے بعد صارفین سے اضافی وصولیاں دسمبر کے بلز میں کی جائیں گی۔

نیپرا اعلامیے کے مطابق اکتوبر میں بجلی کی پیداواری لاگت 9.91 روپے فی یونٹ رہی جبکہ بجلی کی پیشگی فیول لاگت 5.17 روپے فی یونٹ تھی۔

Tabool ads will show in this div