شہبازشریف فیملی کیخلاف منی لانڈرنگ کے چالان میں 100 گواہان شامل

ملزمان پر16 ارب روپے کی منی لانڈرنگ کا الزام عائد کیا گیا ہے
Dec 15, 2021
[caption id="attachment_2107771" align="alignnone" width="640"]shahbazsharifhamzashahbaz فائل فوٹو[/caption]

 سابق وزیراعلیٰ پنجاب شہباز شریف کی فیملی کے خلاف چینی کے کاروبار کے ذریعے منی لانڈرنگ کے ایف آئی اے کے چالان میں گواہان کی فہرست سامنے آگئی ہے۔

فیڈرل انوسٹی گیشن ایجنسی ( ایف آئی اے ) کے چالان میں شامل کئے گئے 100 گواہوں کی فہرست سماء کو موصول ہوگئی ہے۔ اس فہرست میں کباڑیہ،ہارڈ وئیر،ڈرائی فروٹ، سینیٹری اسٹورز مالکان کے نام شامل ہیں۔ ان کے علاوہ اسکریپ ڈیلر، کنسٹرکشن کمپنیز، ڈیری فارم،جنرل اسٹور،آکسیجن سلنڈر فروخت کرنے والے بھی شامل ہیں۔

ایف آئی اے کے دستاویز میں انجینیرز، وکیل،بنکرز،ڈاکٹرز، ایس ای سی پی،ایف آئی اے کے اہلکار بھی ہیں جبکہ رائس ڈیلرز، ڈینٹل پارٹس ڈیلر،جیولرز، پراپرٹی ڈیلر بھی گواہوں کی فہرست میں شامل ہیں۔

چالان میں درج ہے کہ تمام گواہان عدالت کے روبرو ایف آئی اے کے موقف کی تائید کریں گے۔ ایف آئی اے نے منی لانڈرنگ کے تمام دستاویزی شواہد چالان کا حصہ بنائے ہیں۔

چالان کے متن میں کہا گیا ہے کہ شہباز شریف اور حمزہ شہباز نے 16 ارب روپے کرپشن سے اکٹھے کیے۔دونوں مرکزی ملزم منی ٹریل نہیں دے سکے جبکہ ملازمین کے 28 اکاؤنٹس میں رقم منتقلی کے ثبوت موجود ہیں۔اپوزیشن لیڈرشہباز شریف اور حمزہ شہباز کو مرکزی ملزم قرار دیا گیا ہے۔

ایف آئی اے نے شہباز شریف،حمزہ شہباز سمیت دیگر کے خلاف مقدمہ درج کر رکھا ہے جبکہ ملزمان نے بینکنگ عدالت سے عبوری ضمانت کروا رکھی ہے۔ سلمان شہباز سمیت 3 ملزمان اشتہاری قراردئیے گئے ہیں۔منی لانڈرنگ کے مقدمے میں ایف آئی اے کی جانب سے جمع کرایا گیا چالان 7 والیم پر مشتمل ہے۔ایف آئی اے کی جانب سے جمع کرائے گئے چالان میں شہبازشریف فیملی کے بےنامی داروں اورسہولت کاروں کو بھی ملزم نامزد کیا گیا ہے جبکہ سلمان شہباز سمیت 3 ملزمان کو اشتہاری قراردیا گیا ہے۔

 سماء ٹی وی کو فیس بک، ٹویٹر اور انسٹاگرام پر فالو کریں اور یوٹیوب پر لائیو دیکھیں