کراچی: کورنگی میں بزرگ صحافی پر تیزاب سے حملہ

زخمی شخص کی حالت خطرے سے باہر ہے، پولیس

acid-attack

 کراچی کے ضلع کورنگی کے علاقے مہران ٹاؤن میں نامعلوم افراد نے بزرگ صحافی پر تیزاب پھینک دیا۔

ایس ایچ او کورنگی انڈسٹریل ایریا (کیا) پولیس اسٹیشن عنایت اللہ مروت کا کہنا ہے کہ چند نامعلوم افراد نے 66 سالہ شخص آرائیں پر تیزاب پھینکا اور فرار ہوگئے۔ انہوں نے بتایا کہ آرائیں ایک مقامی جریدے ’’کارنامہ‘‘ سے منسلک ہیں ہیں، جس وقت وہ اپنے آفس میں بیٹھے تھے کہ کچھ لوگوں نے ان پر تیزاب پھینکا۔

ان کا مزید کہنا تھا کہ زخمی صحافی کو سول اسپتال کراچی کے برنس سینٹر منتقل کردیا گیا جہاں ڈاکٹر نے ان کی حالت خطرے سے باہر قرار دی ہے۔ ایس ایچ او نے بتایا کہ متاثرہ شخص کو کندھے اور کمر پر جلنے کے زخم آئے ہیں۔

ایس ایس پی کورنگی شاہجہاں خان نے سماء ڈیجیٹل سے گفتگو کرتے ہوئے بتایا کہ زخمی شخص ریٹائرڈ پولیس اہلکار ہے۔ انہوں نے کہا کہ آرائیں اسپیشل برانچ میں تعینات تھا، وہ ریٹائرمنٹ کے بعد مقامی اخبار سے جڑ گیا تھا۔

ایس ایس پی کورنگی کے مطابق آرائیں کا ایک ڈمپر کے مالک سے تنازع چل رہا تھا، متاثرہ شخص کا خیال ہے کہ اس پر حملہ اس لئے کیا گیا کہ وہ گاڑی اپنے گھر کے باہر کھڑی کرنے سے منع کرتا تھا۔

پولیس کا کہنا ہے کہ تیزاب حملے میں زخمی شخص کے بیان کی روشنی میں تحقیقات کا آغاز کردیا گیا ہے۔

واقعے کے بعد زخمی صحافی نے اپنا ایک ویڈیو پیغام جاری کیا ہے، جس کے مطابق وہ اپنے دفتر میں بیٹھا تھا کہ ایک شخص ان پر تیزاب پھینک کر فرار ہوگیا۔

ان کا مزید کہنا ہے کہ جب وہ بھاگنے والے شخص کو دیکھنے کیلئے باہر آئے تو انہوں نے اس کے ساتھ دو مزید افراد کو دیکھا، لیکن وہ انہیں نہیں پہچانتے۔

متاثرہ شخص نے برنس سینٹر کے اسٹاف پر الزام لگایا کہ انہوں نے میرے ساتھ تعاون نہیں کیا، سیکیورٹی گارڈز نے مجھے ہیلتھ سینٹر سے باہر نکال دیا اور دراوزے پر انتظار کرنے کا کہا۔

Tabool ads will show in this div