شرح سود میں اضافے کا امکان، اسٹاک مارکیٹ میں مندی

اسٹاک انڈیکس میں 400 سے زائد پوائنٹس کی کمی
PSX down فوٹو: آن لائن

کاروباری دن کے پہلے روز پاکستان اسٹاک مارکیٹ میں ٹریڈنگ کے دوران 323 پوائنٹس کی کمی دیکھی گئی اور 100 انڈیکس 3 بج کر 4 منٹ پر 42 ہزار 912 پوائنٹس کی سطح پر ٹریڈ کر رہا تھا۔

معاشی ماہرین کا کہنا ہے کہ اسٹیٹ بینک کی جانب سے مانیٹری پالیسی میں شرح سود 100 بیسس پوائنٹس یا ایک فیصد بڑھنے کا امکان ہے جس کے پیش نظر سرمایہ کار محتاط ہوکر ٹریڈنگ کر رہے ہیں۔

شرح سود میں اضافے کے امکانات تب بڑھے جب اسٹیٹ بینک کی جانب سے یکم دسمبر کو جو ٹریژری بلز جاری ہوئے اس پر کامیاب آکشنز کی صورت میں 3 ماہ کے ٹی بلز پر منافع کی شرح 10.39‍ فیصد اور 6 ماہ کے ٹی بلز پر 11.05 فیصد  کی گئی۔

اس سے قبل، 19نومبر کو اعلان ہونے والی مانیٹری پالیسی میں شرح سود 1.5 فیصد بڑھا دیا گیا تھا، جس سے پالیسی ریٹ 8.75 فیصد ہوگیا اور توقع ظاہر کی جا رہی ہے کہ ناصرف منگل کو بلکہ رواں مالی سال کے بعد میں آنے والے دیگر مانیٹری پالیسی اجلاسوں میں بھی شرح سود بڑھانے کا سلسلہ برقرار رہے گا۔

ماہرین کا اس وقت کہنا تھا کہ اسٹیٹ بینک کی جانب سے شرح سود میں 1.50 فیصد اضافہ غیر متوقع تھا جس کے زیر اثر اسٹاک مارکیٹ مندی کا شکار ہے۔ توقع کی جارہی تھی کہ شرح سود میں اضافہ 0.75 فیصد تک ہوگا لیکن ایسا نہ ہوا تاہم ماہرین کے مطابق اس بار شرح سود میں اضافہ ہونے کے بعد انڈیکس بہت زیادہ پوائنٹس سے گرنے کا امکان کم ہے۔

PSX

Tabool ads will show in this div