پتھروں کے شاہکار پرپینٹنگ کا گمان

چترال کی آرٹسٹ شازیہ نواب کاکمال فن

پتھروں کو تراش کر مجسمے بنانے کا فن تو بہت پرانا ہے لیکن اسلام آباد کی ایک آرٹسٹ شازیہ نواب کے ہاتھ میں آکر تو پتھر بھی بولنے لگتے ہیں۔ ان شاہکاروں کو دور سے دیکھا جائے تو اس پر پینٹنگ کا گمان ہوتا ہے اور لگتا ہے آرٹسٹ نے دیدہ زیب رنگوں سے کوئی دلکش تخلیق کی ہے لیکن در حقیقت یہ مختلف رنگوں کے پتھروں کی خوبصورت ترتیب ہوتی ہے۔ چترال کي شازیہ نواب موزیک آرٹ کی ماہر ہیں جن کے فن پاروں کی نمائش اسلام آباد میں ہوئی۔ یہ آرٹ نمائش میں آنے والے بہت سے لوگوں کے لیے بالکل نیا اور انوکھا ثابت ہوا جس کی انہوں نے دل کھول کر تعریف بھی کی۔ نمائش میں تشریف لائی ایک خاتون کا کہنا تھا کہ وہ حیران ہیں کہ آرٹسٹ نے چھوٹے چھوٹے پتھروں سے یہ چیزیں بنائی ہیں، ایسا دلکش آرٹ پہلے کہیں نہیں دیکھا۔ شازیہ نواب کا کہنا ہے کہ کوئی بھی چھوٹے چھوٹے ٹکڑوں کو جوڑ کر کوئی قابل استعمال پروڈکٹ بناتے ہیں جسے موزیک آرٹ کہا جاتا ہے۔ انہوں نے بتایا کہ اس میں گلاس موزیک بھی آتا ہے اور ووڈ موزیک بھی آتا ہے لیکن ان کی جو اسپیشلٹی ہے وہ سارے قدرتی رنگوں کے پاکستانی ماربل ہیں جنہیں وہ استعمال کرکے مختلف اشیاء بنا لیتی ہیں۔ جس طرح قطرہ قطرہ دریا بنتا ہے بالکل اسی طرح ہی پتھر کا ٹکڑا ٹکڑا جوڑ کر وہ شاہکار بنائے گئے جو آرٹسٹ کے کمال مہارت کا ثبوت ہے۔

Mosaic Art

amazing works

Tabool ads will show in this div