ٹیکنالوجی

لاہور:پلاسٹک کی خالی بوتلوں اورڈبوں سے فرنیچرکی تیاری

ماحولیاتی آلودگی پر قابو پانے کی امید

لاہور میں پلاسٹک کی خالی بوتلوں اور دودھ کے ڈبوں کی ری سائکلنگ سے فرنیچر سمیت کارآمد اشیا کی تیاری نے ماحولیاتی آلودگی پر قابو پانے کی امید دلادی ہے۔

لاہور کی فیکٹری میں مشروبات کی خالی بوتلوں،دودھ کے ڈبوں اور پلاسٹک کی دیگر اشیاٗ سے فرنیچر تیار کیا جارہا ہے۔

ری سائیکلنگ پلانٹ کے مالک بابرعزیز بھٹی نے بتایا کہ اس طریقہ کار سے بننے والا پلاسٹک اتنا ہی اچھا ہے جتنا نیا پلاسٹک ہوتا ہے۔اب کوڑے کرکٹ سے توانائی بنانے پر بھی کام کر رہے ہیں۔

وفاقی حکومت نے ملک میں پلاسٹک ریسائیکلنگ کو فروغ دینے کے لئے کوششوں کی یقین دہانی کروائی ہے۔موسمیاتی تغیر کی وفاقی پارلیمانی سیکرٹری تو اس کے لئے نئی قانون سازی کی حمایت کرتی دکھائی دیتی ہے۔ وفاقی پارلیمانی سیکرٹری موسمیاتی تغیر رخسانہ نوید نے بتایا ہے کہ وفاقی حکومت نے اس ٹیکنالوجی کی درآمد ڈیوٹی فری کردی ہے۔

ماہرین کا کہنا ہے کہ اگر پلاسٹک کی ری سائکلنگ کو فروغ دیاجائے توپاکستان میں ماحولیاتی آلودگی کو کم کرنے کےعلاوہ درآمدی بل کو بھی کم کیا جاسکتا ہے۔

RE CYCLED PLASTIC

Tabool ads will show in this div