اسلام آباد: اوپن کیج وائلڈ لائف سینٹرکی منصوبہ بندی

مرغزار کی جگہ بنایا جائے گا،معاون خصوصی موسمیاتی تبدیلی
Nov 24, 2021

[video width="640" height="360" mp4="https://i.samaa.tv/wp-content/uploads/sites/11//usr/nfs/sestore3/samaa/vodstore/urdu-digital-library/2020/11/Non-Zoo-in-Capital-isb-Pkg-24-11.mp4"][/video]

اسلام آباد کے واحد چڑیا گھر مرغزار کو بند ہوئے ڈیڑھ سال ہو گیا لیکن بے خبری کے باعث آج بھی لوگ دور دراز سے اس کی سیر کے لیے آتے ہیں  جنہیں وہاں پہنچ کر مایوسی کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔

چڑیا گھر کے دروازے پر پڑے تالے لوگوں خصوصاً بچوں کے لیے زیادہ مایوس کن ثابت ہوتے ہیں تاہم معاون خصوصی موسمیاتی تبدیلی نے اس حوالے سے ایک بڑی خوشخبری سنائی ہے۔

مرغزار چڑیا گھر کے سامنے اب صرف ہاتھی، ہرن اور شیر کے مجسمے اور ان کی یادیں باقی رہ گئی ہیں جبکہ چڑیا گھر تو جانوروں سے کب کا خالی ہوچکا۔

کاون ہاتھی تو اپنے ننھے مداحوں کواداس چھوڑ کر کمبوڈیا چلا گیا۔ شیر، بندر اور بھالو بھی رخصت ہوئے، نیل گائے، زیبرا اور شتر مرغ بھی نہ رہے۔

چڑیا گھر کے بند دروازے کے پاس موجود جڑواں شہروں اور ملحقہ علاقوں سے آنے والے افراد کا کہنا تھا کہ وہ بچوں کو گھر سے زو دکھانے لائے تھے لیکن یہاں یہ بند پڑا ہے اب سوچ رہے ہیں بچوں کو گھمانے کدھر لے کر جائیں۔

تاہم والدین اور بچوں کی یہ اداسی جلد ہی دور ہونے والی ہے۔ معاون خصوصی برائے موسمیاتی تبدیلی ملک امین اسلم کا کہنا ہے کہ چڑیا گھر کا نیا کنسپٹ یہ ہے کہ جانور قدرتی ماحول اور اوپن ایریا میں رہیں جبکہ اسی میں لوگ آ کر انجوائے کریں۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ اسی حوالے سے منصوبہ بندی کی گئی ہے جس کے تحت یہاں ایک اوپن کیج وائلڈ لائف سینٹر بنایا جائے گا۔ تاہم معاون خصوصی نے اس بڑے منصوبے پر کام کے آغاز کی کوئی تاریخ نہیں بتائی۔

جن جانوروں کے بارے میں صرف کتابوں میں پڑھتے ہیں انہیں اپنی آنکھوں کے سامنے دیکھ کر بچوں کی خوشی ناقابل بیان ہوتی ہے۔ اب دیکھنا یہ ہے کہ ان ننھے ززیٹرز کو یہ خوشی واپس کب ملے گی۔

wildlife centre

Tabool ads will show in this div