سندھ کے نجی اسکولوں کی اصلاح کیلئے حکومت کے اہم فیصلے

درجنوں اسکولوں کو نوٹس جاری

حکومت سندھ کے محکمہ تعلیم نے ضروری سہولتیں نہ رکھنےوالے نجی اسکولوں کے خلاف کارروائی کا فیصلہ  کرلیا۔

محکمے کے مطابق اس فیصلے کے تحت ایسے نجی اسکول کے خلاف کارروائی ہوگی جس میں لیبارٹری، لائبریری اور میدان نہیں ہوگا۔

اس حوالے سے محکمہ تعلیم نے پہلے مرحلے میں صوبے کے درجنوں اسکولوں کی نشاندہی کے بعد انہیں نوٹس بھی جاری کر دیے ہیں۔

محکمے کا کہنا ہے کہ سندھ کے 50 فیصد نجی اسکولوں میں قوائد کےمطابق سہولیات موجود نہیں جن میں لیبارٹری، لائبریری اور کھیل کے میدان بھی شامل ہیں۔

علاوہ ازیں محکمہ تعلیم نے یہ بھی فیصلہ کیا ہے کہ رجسٹریشن نہ کرانے والے اسکولوں پر یومیہ 500 روپےجرمانہ عائد کیا جائے گا۔

دریں اثناء صوبے کے عوام نے حکومت کے اس فیصلے کو سراہتے ہوئے کہا کہ گو صوبے کا محکمہ تعلیم کئی دہائیوں بعد جاگا ہے لیکن پھر بھی دیر آید درست آید کے مصداق یہ بھی بہت غنیمت ہے۔ عوام نے امید ظاہر کی ہے کہ اگر اس فیصلے پر بجا طور عملمدرآمد ہوا تو صوبے کے تعلیمی ماحول میں بہتری رونما ہونے کے امکانات روشن ہوں گے۔

education department

Tabool ads will show in this div