اقتصادی رابطہ کمیٹی نے گندم کی درآمد کا ٹینڈر منسوخ کردیا

اجلاس میں پیٹرول اور ڈیزل مارجن بڑھانے کے فیصلہ موخر

وفاقی وزیر برائے اقتصادی امور عمر ایوب کی زیر صدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کے اجلاس پیر کو ہوا جس  میں عالمی مارکیٹ میں قیمتوں میں اضافے کے باعث گندم کی درآمد کا ٹینڈر منسوخ کردیا گیا۔

اجلاس میں گندم کے ذخائر اور سپلائی کا جائزہ لیا گیا اور گندم کی درآمد کے لیے آٹھویں ٹینٹدر کو منسوخ کرنے کی منظوری دی گئی۔ گندم کی خریداری کا ساتواں ٹینڈر بھی ختم کرکے نیا ٹینڈر جاری کرنے اور افغانستان میں گندم کی ضروریات کا ازسر نو جائزہ لینے کی بھی ہدایت کی گئی۔

واضح رہے کچھ عرصہ پہلے مشیر خزانہ شوکت ترین کے زیر صدارت اقتصادی رابطہ کمیٹی کے ہونے والے اجلاس میں کمیٹی نے 6 لاکھ 40 ہزار میٹرک ٹن گندم درآمد کرنے کی منظوری دی تھی۔

اقتصادی امور کے وزیر عمر ایوب کی سربراہی میں ہونے والے اجلاس میں آئل مارکیٹنگ کمپنیوں  اور آئل ڈیلرز کے منافع میں اضافہ کرنے کا فیصلہ بھی موخر کر دیا گیا اور مارجن کے تعین کے لیے قائم ای سی سی کی ذیلی کمیٹی سے تفصیلات طلب کر لی گئی۔

ای سی سی نے جذبہ خیر سگالی کے طور پر افغانستان سے درآمد کی جانے والی مختلف اشیاء پر ٹیرف کے خاتمے کے لیے سمری کی منظوری دی۔

اسکے علاوہ بلکسر سے میانوالی سڑک کی تعمیر کیلئے 6 ارب روپے کے فنڈز کے اجراء کی منظوری دیدی گئی، رقم سڑک کی تعمیر سے متاثرہ افراد کے لیے مختص کی جائے گی۔

اجلاس میں ہیوی الیکٹرک کمپلکس کے ملازمین کی تنخواہوں کی منظوری بھی دی گئی اور ہیوی الیکٹرک کمپلیکس کی نجکاری جنوری کے وسط تک مکمل کرنے کی ہدایت بھی کی گئی۔

پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن کی مارجن نہ بڑھانے پر ملک گیر ہڑتال

واضح رہے پیر کو پاکستان پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایشن (پی پی ڈی اے) نے جمعرات سے ملک گیر ہڑتال کا اعلان کردیا ہے جس کے بعد جمعرات سے صرف ایمبولنسز کو پیٹرول فراہم کیا جائے گا۔

ایسوسی ایشن کے ترجمان کا کہنا ہے کہ جمعرات سے ملک بھر کے تمام پیٹرول پمپس بند رہیں گے۔ انہوں نے کم منافع کے مارجن پر پٹرول فروخت کرنے پر ہڑتال کی کال دی ہے۔ ہمارے پاس ہڑتال کے علاوہ کوئی راستہ نہیں ہے کیونکہ حکومت ہمارے مطالبات کی 17 نومبر کی ڈیڈ لائن کو پورا کرنے میں ناکام رہی ہے۔

اس سے قبل چیئرمین پیٹرولیم ڈیلرز ایسوسی ایس عبدالسمیع خان نے مارجن نہ بڑھانے کی صورت میں 5 نومبر کو ملک میں پیٹرول پمپس بند رکھنے کا اعلان کیا تھا۔

Wheat crisis

Tabool ads will show in this div