امریکی سینیٹ کےبلزاورکمیشن رپورٹس سےپاکستان کیخلاف تحفظات نکال دیےگئے

افغانستان میں انتقال اقتدار کے بعد امریکہ میں پاکستان کے حوالے سےآوازیں اٹھ رہی تھیں

امریکی سینیٹ میں پیش کردہ 4 بلز اور کمیشن رپورٹس  سے پاکستان  کے خلاف تحفظات نکال دیئے گئے ہیں۔

اتوار کو امریکا سے پاکستان پہنچنے پر صحافیوں  سے گفتگو میں امریکہ کے ڈپٹی نیشنل فنانس چئیر اور ڈیموکریٹک پارٹی کے رہنما طاہر جاوید نے بتایا کہ  امریکی سینٹ میں پیش کردہ چار بلز اور کمیشن رپورٹس میں افغانستان کی بنیاد پر پاکستان کے بارے میں مختلف تحفظات کا اظہار کیا گیا تھا لیکن  اب ان تحفظات کو بلز سے نکال دیا گیا ہے۔

طاہرجاوید کا کہنا تھا کہ افغانستان میں انتقال اقتدار کے بعد امریکہ کے اندر پاکستان کے حوالے سے مختلف آوازیں اٹھ رہی تھیں اورخدشہ تھا کہ افغانستان کے معاملے کو لے کرپاکستان کو قربانی کا بکرا بنایا جائے گا اور اس حوالے سے کچھ بلز بھی سامنے آئے تھے لیکن آہستہ آہستہ اب وہ چاروں بلز سے پاکستان کا نام نکال دیا گیا ہے۔

طاہر جاوید کا کہنا تھا کہ جوبائیڈن انتظامیہ کی مختلف معاملات پر پاکستان کے ساتھ  ہر سطح پربات چیت چل رہی ہے اور اس کے نتائج بھی سامنے آرہے ہیں۔یہ درست نہیں کہ جوبائیڈن انتظامیہ کی شاید پاکستان کے ساتھ ریلیشن شپ آگے نہیں بڑھ رہے۔

انھوں نے مزید بتایا کہ 2 امریکی  کانگریس مین اس وقت بھی اسلام آباد میں موجود ہیں اوریہ ارکان کانگریس پاکستان کے بعد بھارت بھی جائیں گے۔طاہر جاوید نے کہا کہ جنوبی ایشیا میں پاکستان کو نظرانداز نہیں کیا جا سکتا ہے اور پاکستان امریکہ کے ساتھ مزاکرات  کی میز پر ہے۔

US SENATE

Tabool ads will show in this div