لاہور:اسموگ کی بگڑتی صورتحال، مختلف پابندیاں عائد

نوٹیفیکیشن جاری کردیا گیا

پنجاب حکومت نے اسموگ کی روک تھام کے لیے مختلف پابندیاں عائد کرتے ہوئے نوٹیفیکیشن جاری کردیا۔

نوٹیفیکیشن کے مطابق لاہور کے نجی اداروں کو نصف سے کام چلانے کا کہا گیا ہے جبکہ تعلیمی اداروں کو ہدایت دی گئی ہے کہ وہ طلبہ کو لانے لے جانے والی بسوں اور ویگنوں کی تعداد بڑھا دیں تاکہ نجی گاڑیوں کی آمد و رفت کو کم کیا جاسکے۔

علاوہ ازیں نوٹیفیکیشن میں  یہ بھی بتایا گیا ہے کہ اب دھواں چھوڑنےوالی گاڑی کو دو ہزارروپے کا جرمانہ بھرنا ہوگا۔ نوٹیفیکیشن کے تحت اب فضائی آلودگی کی وجہ بننے والے بھٹوں اور فيکٹريوں کو ايک لاکھ روپے تک جرمانے کيے جائيں گے۔

دہلی میں بھی اسموگ کی بگڑتی صورتحال کے پیش نظر ترجمان پنجاب حکومت حسان خاور کا کہنا ہے کہ حکومت کی کوشش ہے کہ بھارت بھی اس مسئلے کے حل کے لیے کام کرے۔

اسموگ پر قابو پانے کی حکمت عملی کے تحت کمشنر آفس ميں ايک ماہ کے لیے آدھي گاڑيوں کو پارک کرديا گيا ہے۔

لاہور ميں کئی روز سے اسموگ کے زہريلے بادل چھائے ہوئے ہيں جو صبح 7 سے 9 بجے تک اور پھر مغرب کے بعد اسموگ تيزی سے پھيلتی ہے۔ گلبرگ، ماڈل ٹاؤن،  فيروز پور روڈ اور برکت مارکيٹ سميت کئی علاقوں ميں لوگ شديد متاثر ہورہے ہیں۔

اسموگ کے باعث شہریوں کو سانس لينا بھی دشوار ہو رہا ہے۔ اسی صورتحال کے پیش نظر طلبہ کے والدین نے اسکول کی ٹائمنگ تبديل کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

punjab government

SMOG

Lahore smog

Tabool ads will show in this div