انتخابی اصلاحات کو نہیں مانیں گے، مولانا فضل الرحمان

کوئٹہ میں پی ڈی ایم کی مہنگائی کیخلاف ریلی اورجلسہ

پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ نے مہنگائی کیخلاف کوئٹہ میں احتجاجی جلسہ کیا۔ مولانا فضل الرحمان کہتے ہیں کہ مہنگائی کی چکی میں پوری قوم پس رہی ہے، انتخابی اصلاحات کے نئے قوانین کو نہیں مانیں گے۔

حکومت مخالف اتحاد پاکستان ڈیموکریٹک موومنٹ (پی ڈی ایم) کی جانب سے ملک میں مہنگائی کیخلاف ایوب اسٹیڈیم سے ریلی نکالی گئی اور ایدھی چوک پر جلسہ منعقد کیا گیا۔

احتجاجی جلسے سے سربراہ پی ڈی ایم مولانا فضل الرحمان نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ مہنگائی کی چکی میں پوری قوم پس رہی ہے، قوم پر ٹیکسز کے پہاڑ گرائے جارہے ہیں، 50 لاکھ گھر دینے کا وعدہ کرنے والے لوگوں کو بے گھر اور ایک کروڑ نوکریاں دینے کا وعدہ کرنے والے لوگوں کو بیروزگار کررہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ ہم نے ملک اور اس کے اداروں کو چلانا ہے، اداروں کو اپنی آئینی حدود میں رہنا ہوگا، کل بھی غلامی کیخلاف تھے آج بھی مخالفت کرتے ہیں، ہماری عدلیہ پر بھی سوالات اٹھائے جارہے ہیں، اسٹیٹ بینک کو براہ راست آئی ایم ایف کے ماتحت لانے کیلئے بل لایا جارہا ہے، گورنر اسٹیٹ بینک کے علاوہ کوئی باہر سے نوکری کیلئے پاکستان نہیں آیا۔

مولانا فضل الرحمان نے مزید کہا کہ دھاندلی زدہ حکومت اصلاحات کی بات کررہی ہے، انتخابی اصلاحات کے حوالے سے تمام قوانین کو جوتے کے نوک پر رکھیں گے۔

انہوں نے کہا کہ 10 سالوں سے کہہ رہا ہوں عمران خان پاکستان کی سیاست کا غیر ضروری عنصر ہے، عمران خان نالائق ہونے کیساتھ نااہل بھی ہے، ماضی کے کچھ غلط فیصلوں سے دفاعی قوت پر سوالات اٹھائے گئے۔

سربراہ پی ڈی ایم کا مزید کہنا تھا کہ بڑی مضبوطی کیساتھ میدان میں نکلے ہیں، قوم کو مایوس نہیں ہونے دینگے، ملک میں آئین اور جمہوری حکمرانی ہونی چاہیے، حکومت کیخلاف جدوجہد جاری رہے گی، آئین کی خلاف ورزی نہیں کرنا چاہتے۔ انہوں نے عمران خان سے کہا کہ اقتدار چھوڑ کر چلے جانے میں تمہاری خیر ہے۔

جلسے سے خطاب کرتے ہوئے سربراہ پشتونخواملی عوامی پارٹی محمود خان اچکزئی کا کہنا تھا کہ ملک غلطیوں کی وجہ سے ڈوب رہا ہے، یہاں حق کی بات کرنے پر  پابندی ہے، اصولوں پر بات کرنیوالا ’را‘ کا ایجنٹ کہلایا جاتا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان ہمارا مادر وطن، ماں سمجھنے کی وجہ سے اس ملک کیلئے ہم نے لڑائیاں لڑی ہیں، آئین کی بالادستی کیلئے گول میز کانفرنس بلانا ہوگی، ہم اس ملک کو بچانے نکلے ہیں، ایرانی انقلاب کی طرح لوگوں کو سڑکوں پر لاکر تبدیلی لانا ہیں۔

محمود خان اچکزئی کا مزید کہنا تھا کہ ٹی ٹی پی سے مذاکرات ہورہے ہیں مگر ہم سے نہیں، ہمارے ملک کو خطرناک گیم میں پھنسایا جارہا ہے۔

جلسے سے صدر نیشنل پارٹی ڈاکٹر عبدالمالک بلوچ اور دیگر نے بھی خطاب کیا۔ جلسے میں اشیاء خور و نوش، ادویات، بجلی اور گیس کی قیمتوں میں کمی سمیت 13 مطالبات پر مبنی قرار داد بھی منظور کی گئی۔

Pakistan Democratic Movement

Tabool ads will show in this div