بھارت: باغیوں کےحملے میں سیکیورٹی اہلکاروں سمیت 7افراد ہلاک

حملے میں زخمی 5 بھارتی فوجی اسپتال منتقل
Nov 14, 2021

بھارت کی شمال مشرقی ریاست منی پور میں مشتبہ باغیوں نے ہفتے کو گھات لگا کر سیکیورٹی فورسز پر مبینہ حملہ کیا ہے جس کے نتیجے میں ایک کرنل، ان کی اہلیہ، بیٹا اور چار سپاہی ہلاک ہوئے ہیں۔

وائس آف امریکا کے مطابق واقعہ منی پور کے ضلع چوراچندپور کے سیہکن گاؤں کے قریب پیش آیا جو میانمار کی مغربی سرحد کے کافی قریب ہے۔ ہفتے کو ہونے والا یہ حملہ چار جون 2015 کے بعد سے منی پور میں سیکیورٹی فورسز پر ہونے والا پہلا بڑا حملہ ہے۔

پولیس کا کہنا ہے کہ یہ حملہ ایسے وقت میں کیا گیا جب کرنل اپنی بیس سے آسام رائفلز پیراملٹری بٹالین کے اگلے مورچے کا معائنہ کر کے واپس آ رہے تھے۔ پولیس کے مطابق باغیوں نے پہلے ان کے قافلے پر حملہ کیا اور دھماکہ خیز مواد سے اسے نشانہ بنایا جس کے بعد سڑک کے دونوں اطراف سے خودکار ہتھیاروں سے فائرنگ کی۔

حکام کے مطابق اس حملے میں پانچ بھارتی سپاہی زخمی بھی ہوئے جنہیں اسپتال منتقل کر دیا گیا۔

خیال رہے کہ منی پور میں اس وقت لگ بھگ دو درجن بھارتی نسلی باغی گروہ سرگرم ہیں جس میں سے کچھ اپنے قبیلوں یا نسلی گرہوں کے لیے علیحدہ وطن کا مطالبہ کرتے ہیں۔ ان میں سے کچھ کے میانمار کے جنگلات کے اندر بیسز اور تربیتی کیمپوں میں ہیں۔ اس کے علاوہ کچھ باغی گروہوں کے میانمار سے تعلق رکھنے والے برمی باغی گروہوں سے تعلقات ہیں۔

 

Asam

Insurgents attack