نئی دہلی کے تمام اسکولوں کو بند کردیا گیا

لوگوں کو گھروں سے کام کرنے کی ہدایات جاری
A police personnel stands guard as tourists visit the Taj Mahal amid smog conditions and fog during a cold day, in Agra on January 17, 2021. (Photo by Pawan SHARMA / AFP)
A police personnel stands guard as tourists visit the Taj Mahal amid smog conditions and fog during a cold day, in Agra on January 17, 2021. (Photo by Pawan SHARMA / AFP)

بھارتی دارالحکومت نئی دہلی میں زہریلی اسموگ کی وجہ سے تعلیمی اداروں اور تعمیراتی شبعوں کو بند کردیا گیا ہے، جب کہ سرکاری ملازمین کو گھر سے کام کرنے کی ہدایت جاری کر گئی ہے۔

این ڈی ٹی وی کی جانب سے جاری اطلاعات کے مطابق نئی دہلی کے وزیر اعلیٰ اروند کجریوال کا کہنا ہے کہ کہ آئندہ 7 روز تک سرکاری ملازمین گھر سے کام کریں گے۔

حکام کی جانب سے جاری ہدایت کے مطابق تعمیراتی شعبہ 4 روز تک بند رہے گا، جو فضا میں آلودگی میں اضافے کا باعث بنتا ہے۔ وزیر اعلیٰ کجریوال کے مطابق تمام سرکاری دفاتر بند رہیں گے، جب کہ نجی دفاتر کیلئے ایڈوائزری جاری ہوگی کہ وہ بھی جس قدر ممکن ہوسکے گھر سے کام کریں۔

گزشتہ ہفتے دیوالی سے فضا میں آلودگی خطرناک حد تک بڑھ گئی کہ نئی دہلی اور آس پاس کے علاقے بشمول گڑگاؤں، نوئیڈا اور غازی آباد میں لوگوں کا سانس لینا بھی دوبھر ہوگیا۔

دیوالی پر ہزاروں افراد نے نئی دہلی، ہریانہ اور اتر پردیش میں احکامات کی کھلم کھلا خلاف ورزی کی اور پٹاخے پھوڑے تھے جس کے باعث فضا میں زہریلے مادے کی مقدار بڑھ گئی۔ مرکزی آلودگی کنٹرول بورڈ کے مطابق شام 6.30 بجے نئی دہلی میں مجموعی ایئر کوالٹی انڈیکس (اے کیو آئی) 427 تھا۔ 400 سے زیادہ اے کیو آئی خطرناک لیول سمجھا جاتا ہے اور یہ دل اور سانس کی بیماریوں جیسے پھیپھڑوں کے کینسر کا سبب بن سکتے ہیں۔

بھارت کی سپریم کورٹ کے چیف جسٹس این وی رمنا نے ریمارکس دیے تھے کہ آپ دیکھ رہے ہیں کہ صورت حال کتنی خراب ہے، یہاں تک کہ ہمیں گھروں میں بھی ماسک پہننے پڑتےہیں۔ انہوں نے استفسار کیا کہ ہمیں بتائیں کہ آپ کس طرح ہنگامی اقدامات کرنے کا ارادہ رکھتے ہیں؟ دو دن کا لاک ڈاؤن؟ اے کیو آئی کو کم کرنے کے بارے میں آپ کا کیا منصوبہ ہے؟۔

جس پر ریاستی حکام نے اعتراف کیا کہ نئی دہلی کی ہوا میں سانس لینا ایک دن میں 20 سگریٹ پینے کے مترادف ہے، ہم صورت حال کی سنگینی سے متفق ہیں۔ چیف جسٹس نے نئی دہلی کو خبردار کیا کہ وہ سیاست سے بالاتر ہو کر اروند کیجریوال حکومت کے ساتھ مل کر کام کرے۔ دہلی حکومت کی سخت سرزنش کرتے ہوئے عدالت نے کہا کہ آپ نے دو ہفتے پہلے تمام اسکول کھول دیے تھے، جس کے بعد بچوں کو پھیپھڑوں کے مسائل کا خطرہ ہوسکتا ہے۔

Tabool ads will show in this div