پارلیمانی سیکریٹری صحت کی کرونا الاؤنس میں بےضابطگی کیخلاف انکوائری کی ہدایت

انتظامیہ کے خلاف نعرے بازی کی
Nov 09, 2021

پارلیمانی سیکرٹری صحت ڈاکٹر نوشین حامد نے پمز اسپتال کے ڈاکٹرز اور انتظامیہ کے درمیان تنازعات فوری حل کرنے کی ہدایت کی ہے۔

منگل کو پمز اسپتال میں ڈاکٹرز کے احتجاج اور مطالبات حل کرنے کے لیے پارلیمانی سیکرٹری صحت ڈاکٹر نوشین حامد نے مذاکرات کئے۔ نوشین حامد نے ڈاکٹرز کے مسائل فوری طور پر حل کرنے کے احکامات جاری کیے۔ انھوں نے ٹرینی ڈاکٹرز اور ہاؤس آفیسر کو فوری طور پر کرونا الاؤنس کی ادائیگی کرنے کی ہدایت کی۔

پارلیمانی سیکرٹری صحت نے ڈاکٹرز کی غلط فہرستیں بنانے کے ذمہ داران کے خلاف انکوائری کرنے کی بھی ہدایت کی اور کہا کہ جن لوگوں کے نام فہرست میں رہ گئے ہیں ان کیلئے بھی فوری طور پر اقدامات کئے جائیں۔

اس سے قبل اسلام آباد کے پمز اسپتال میں ڈاکٹرز کے احتجاج کےباعث مریضوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑا۔پمزاسپتال میں ڈاکٹرز نے اسپتال ڈائریکٹر ڈاکٹراعجاز قدیر کے خلاف شدید احتجاج کیا۔ ڈاکٹرز کا کہنا تھا کہ احتجاج کی وجہ کرونا الاؤنس کی ادائیگی میں تاخیر اور بے ضابطگیاں ہیں۔ ڈاکٹرز نے ہاتھوں نے پلے کارڈز اٹھائے ہوئے تھے اورانھوں نے انتظامیہ کے خلاف نعرے بازی کی۔

احتجاج کرنے والے ڈاکٹرز نے مزید بتایا کہ ڈائریکٹر ڈاکٹراعجاز قدیر کی جانب سے اسپتال انتظامیہ میں من پسند تعیناتیاں کی گئی ہیں۔ وزارت صحت کی جانب سے اس معاملے کی انکوائری کاحکم دیا گیا لیکن انکوائری کمیٹی میں من پسند لوگوں کو شامل کرکے اس معاملے کو دبانے کی کوشش کی گئی۔

ڈاکٹرز کے احتجاج کےباعث پمزاسپتال کی او پی ڈیز بند کردی گئی جس کی وجہ سے دوردرازعلاقوں سے آنےوالےمریضوں کو شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑا۔

Tabool ads will show in this div